حکومت کیخلاف جہاد فرض ہوچکا، ووٹ دینے والے معافی مانگیں: فضل الرحمن

      حکومت کیخلاف جہاد فرض ہوچکا، ووٹ دینے والے معافی مانگیں: فضل الرحمن

  



پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک)جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے قائد مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ یہاں سب کا حال پشاور بی آر ٹی جیسا ہے۔ جس شہر میں بی آر ٹی جیسا منصوبہ ہو، وہاں ایک ووٹ نہیں ملتا لیکن سب جیت گئے، پھر بھی حکومت کہتی ہے دھاندلی نہیں ہوئی۔ گزشتہ روزیہاں پشاور میں تحفظ مدارس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ گندم، چاول اور کپاس کسی کا ہدف بھی پورا نہیں جبکہ روپے کی قدر گرا کر بھی برآمدات کا ہدف نہیں حاصل کیا جا سکا۔ان کا کہنا تھا کہ دھاندلی زدہ الیکشن کو ہم نے تسلیم نہیں کیا اور اس حکومت کی مخالفت جہاد ہے جو ہر پاکستانی پر فرض ہے۔ مولانا نے الزام لگایا کہ کشمیر بیچنے والے اب کس منہ سے کشمیریوں سے یکجہتی کے لئے ریلیاں نکال رہے ہیں۔ کشمیر پر امریکی ثالثی کی حمایت والے کو کیا خبر کیا ہونے والا ہے۔انہوں نے کہا کہ فاٹا میں آپریشنز کی حمایت کرنے والے آج وہاں لاشوں پر واویلا کر رہے ہیں۔ جن پارٹیوں نے فاٹا انضمام کے حق میں ووٹ دیا، وہ قوم سے معافی مانگیں۔ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ کس کے سامنے روئیں، عالمی سٹیبلشمنٹ آج چاہتی ہے کہ مدارس کو ختم کریں جبکہ ہم آزادی مارچ میں دنیا کو بتا دیا کہ ہم منظم اور پرامن لوگ ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملکی معیشت تباہ ہو چکی، حکومت نے صرف ایک سال میں قرض لینے کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے۔ حکمرانوں کو ووٹ دینے والے آج اپنا سر پیٹ رہے ہیں۔ان لوگوں کے ہاتھوں میں پاکستان مزید رہا توملک تباہ ہو جائیگا۔ ملک کو آئی ایم ایف کے حوالے سے کر دیاگیا ہے،چین سے اربوں ڈالر والا منصوبہ امریکہ کے کہنے پر تباہ کیا گیا ہے۔

فضل الرحمان

مزید : صفحہ اول