’گائے کے پیشاب اور گوبر سے کرونا وائرس کا علاج ممکن ہے‘ ہندو مہا سبھا کے صدر کا انوکھا دعویٰ

’گائے کے پیشاب اور گوبر سے کرونا وائرس کا علاج ممکن ہے‘ ہندو مہا سبھا کے صدر ...
’گائے کے پیشاب اور گوبر سے کرونا وائرس کا علاج ممکن ہے‘ ہندو مہا سبھا کے صدر کا انوکھا دعویٰ

  



نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) چین کے بعد بھارت میں بھی کرونا وائرس کے چند ایک کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد ہندو انتہا پسندوں کی جانب سے اس بیماری کے انوکھے علاج پیش کردیے گئے ہیں۔

ہندو مہا سبھا کے صدر سوامی چکر پانی مہاراج نے دعویٰ کیا ہے کہ کرونا وائرس کا علاج گائے کے پیشاب اور گوبر کے ذریعے کیا جاسکتا ہے، انہوں نے دنیا سے کرونا وائرس کے بھیانک اثرات کے خاتمے کیلئے خصوصی پوجا کا بھی اعلان کیا۔

سوامی چکر پانی مہاراج نے کرونا وائرس کے علاج کی مزید تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ گائے کے پیشاب اور گوبر سے کرونا وائرس کے اثرات ختم ہوجائیں گے۔ ایک آدمی اگر اوم نماہ شوائے کا نعرہ بلند کرتے ہوئے اپنے جسم پر گائے کا گوبر لگائے تو وہ کرونا وائرس سے محفوظ رہے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس