پاکستان اور بھارت کو کشمیر یوں کی خواہش کے مطابق مسئلہ کشمیر حل کرنا ہوگا: جنرل باجوہ 

  پاکستان اور بھارت کو کشمیر یوں کی خواہش کے مطابق مسئلہ کشمیر حل کرنا ہوگا: ...

  

          راولپنڈی(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کو مسئلہ کشمیر  کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق پرامن انداز میں حل کرنا چاہئے،وقت ہے کہ ہر سطح پر اور سمت میں امن کا ہاتھ بڑھایا جائے، ہم پرامن بقائے باہمی کے اصولوں پر کاربند ہیں، کسی کو  اجازت نہیں دیں گے کہ ہمارے امن کی خواہش کا غلط مطلب نکالے اور اسے ہماری کمزوری سمجھے، افواج پاکستان کسی بھی قسم کے خطرے کا مقابلہ کرنے کیلئے ہما وقت تیار ہیں۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق  پاکستان ائیرفورس اکیڈمی اصغر خان میں 144ویں جی ڈی پائلٹ،90انجینئرنگ کورس اور100ویں اے ڈی کورسز کی پاسنگ آؤٹ پریڈ  منگل کو منعقد ہوئی۔چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ مہمان خصوصی تھے جبکہ ائیرچیف مارشل مجاہد انور خان نے بھی تقریب میں شرکت کی۔ترجمان افواج پاکستان کے مطابق آرمی چیف نے گریجویٹ کیڈٹس کو یہ سنگ میل عبور کرنے پر مبارکباد دی اور اس موقع پر اپنے خطاب میں جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاکستان ایک پرامن ملک ہے،جس نے عالمی اور علاقائی امن کیلئے بہت قربانیاں دی ہیں۔ہم پرامن بقائے باہمی کے اصولوں پر کاربند ہیں۔یہ وقت ہے کہ ہر سطح پر اور سمت میں امن کا ہاتھ بڑھایا جائے۔آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کو لازمی جموں و کشمیر کا مسئلہ وہاں کے لوگوں کی خواہشات کے مطابق پرامن انداز میں حل کرنا چاہئے تاکہ کشمیر میں انسانی المیے کا خاتمہ ہو اور یہ مسئلہ ہمیشہ کیلئے حل ہو۔آرمی چیف نے واضح کیا کہ کوئی بھی ہماری امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھے اور ہم کسی کو بھی اس کی اجازت نہیں دیں گے کہ ہمارے امن کی خواہش کا غلط مطلب نکالے۔افواج پاکستان کسی بھی قسم کے خطرے کا مقابلہ کرنے کیلئے ہما وقت تیار ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دشمنوں کے خلاف آپریشنز میں تینوں مسلح افواج نے مربوط ہم آہنگی اور رابطہ کاری کو یقینی بنایا اور اس کی وجہ سے داخلی سلامتی کا ماحول بھی بہتر ہوا۔آرمی چیف نے اس موقع پر دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاک فضائیہ کے کردار کی بھی خصوصی طور پر تعریف کی اور کہا کہ جس طرح ہمارے بہادر وں نے اپنی پیشہ وارانہ مہارتوں کا مظاہرہ کیا ہے اورآپریشن سوئفٹ ریٹارٹ کے دوران جس صلاحیت کا مظاہرہ کیا گیا وہ ہمارے عزم اور باصلاحیت ہونے کا منہ بولتا ثبوت ہے اور پوری قوم کو اپنی  ائیرفورس پر فخر ہے اور انہیں یقین ہے کہ پاک فضائیہ مستقبل میں شاندار روایات کی بلندیوں کو چھوے گی۔آرمی چیف نے اس موقع پر سعودی عرب کے کیڈٹس کی اکیڈمی میں موجودگی کو بھی سراہا اور کہا کہ یہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان بہترین تعلقات کا عکاس ہے۔دونوں ممالک بھائی چارے اور اسلام کے مضبوط رشتے میں بندھے ہوئے ہیں۔ترجمان کے مطابق مجموعی طور پر133کیڈٹس نے گریجویٹ کیا جس میں 11سعودی ائیرفورس کے کیڈٹس اور چھ لیڈی کیڈٹس بھی شامل تھے۔آرمی چیف نے گریجویشن کرنے والے آفیسرز کو ٹرافی اور انعامات سے نوازا۔تقریب کے آخری میں پاک فضائیہ کی ایروبیٹک ٹیم نے شاندار فلائی پاسٹ کا مظاہرہ کیا۔شیردل ٹیم نے خصوصی ملٹری ڈرل حمزہ فلائٹ پیش کی۔آئی ایس پی آرکے مطابق آرمی چیف نے گریجویٹ کیڈٹس کو ٹرافیاں  اور ایوارڈز دیئے۔ رائل سعودی ائیر فورس کے  گیارہ کیڈٹس  سمیت 133 کیڈٹس پاس آؤٹ ہوئے۔ پاس آؤٹ ہونے والوں میں 6 خواتین کیڈٹس بھی شامل تھیں۔چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی ٹرافی کیڈٹ فیضان اقبال کو دی گئی۔ بیسٹ الائیڈ کیڈٹ ٹرافی کیڈٹ ہاشم محمد الصوفیانی کو دی گئی جب کہ چیف آف ائیر سٹاف ٹرافی کیڈٹ شہر یار خان کو دی گئی۔ انجینئرنگ میں چیف آف ائیر سٹاف ٹرافی کیڈٹ محمد عثمان کو دی گئی۔ فلائنگ ٹریننگ میں چیف آف ائیر سٹاٹ ٹرافی کیڈٹ دانش قیوم کو دی گئی۔اعزازی شمشیر کیڈٹ محمد عثمان اور کیڈٹ محمد ابتسام نعیم کو دی گئی۔

جنرل باجوہ

مزید :

صفحہ اول -