چھوٹے بجلی چور گرفتار بااثر آزاد پھر رہے ہیں،لاہور ہائیکورٹ

چھوٹے بجلی چور گرفتار بااثر آزاد پھر رہے ہیں،لاہور ہائیکورٹ

لاہور (نامہ نگارخصوصی ) لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی نے بجلی چوری کیس کی سماعت کرتے ہوئے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ ملک میں بااثر افراد خود کو قانون سے بالاتر سمجھتے ہیں ،5 ہزار چوری کے ملزم کو گرفتار کر لیا جاتا ہے اور کروڑوں کی چوری کرنے والے بے خوف پھرتے رہتے ہیں ۔فاضل عدالت نے اعجاز نامی فیکٹری مالک کے خلاف ساڑھے 3کروڑ روپے کی بجلی چوری کے ملزم کی درخواست ضمانت کی سماعت کی ۔ سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ملزم کی فیکٹری سے بجلی چوری کی گئی جس پر لیسکو نے مقدمہ درج کروا دیا تھا ملزم نے ماتحت عدلیہ میں بھی ضمانت کی درخواست دائر کی جسے مسترد کر دیا گیا مگر تاحال اسے گرفتار نہیں کیا جا سکا ۔ عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے قرار دیا کہ ملک میں بااثر لوگ خود کو ہر قانون سے بالاتر سمجھتے ہیں چھوٹے چوروں کو تو گرفتار کر لیا جاتا ہے مگر کروڑوں کی چوری کرنے والوں کو پوچھا بھی نہیں جاتا ۔ عدالت نے وکلا کے دلائل سننے کے بعد درخواست ضمانت مسترد کر دی ۔

بااثر آزاد

مزید : صفحہ آخر


loading...