نوجوان مستقبل کے معمار ہیں، ملک سے سفارش کے کینسر کو ختم کر کے میرٹ کو آگے لانا ہے، قرضہ سکیم میں شفافیت کو مدنظر رکھا جائے گا: وزیراعظم

نوجوان مستقبل کے معمار ہیں، ملک سے سفارش کے کینسر کو ختم کر کے میرٹ کو آگے ...
نوجوان مستقبل کے معمار ہیں، ملک سے سفارش کے کینسر کو ختم کر کے میرٹ کو آگے لانا ہے، قرضہ سکیم میں شفافیت کو مدنظر رکھا جائے گا: وزیراعظم

  


حیدر آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ملک سے سفارش کے کینسر کو ختم کر کے میرٹ کو آگے لائیں گے اور حق دار کو اس کا حق دیں گے، نوجوان پاکستان کے مستقبل کے معمار ہیں اور قرضہ سکیم نوجوانوں کیلئے ہی ہے۔ حیدر آباد میں یوتھ بزنس لون سکیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ معاشرے کا فرض ہے کہ کوئی بچہ تعلیم سے محروم نہ رہے اور ملک میں میرٹ کو قائم کیا جائے ، کوئی بھی فیصلہ رنگ و نسل کے اعتبار سے نہیں ہونا چاہئے، یقین ہے کہ جو نوجوان قرضہ حاصل کریں گے وہ واپس بھی کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بڑے گروپس کو اربوں کا قرضہ ملتا ہے، نوجوانوں کیلئے 20 لاکھ روپے بھی نہیں؟ حکومت نوجوان طبقے کو آگے لانا چاہتی ہے اس لئے ہم نے پاکستان کے نوجوانوں کیلئے قرضہ سکیم کا اجراءکیا ہے۔ اس سکیم میں شفافیت کو مدنظر رکھا جائے گا اور میری بھی سفارش نہیں چلے گی جبکہ یہ بھی چیک کیا جائے گا کہ کہیں کوئی ناانصافی تو نہیں ہوئی۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملک سے سفارش کے کینسر کوختم کر کے میرٹ کو قائم کرنا ہے اور حق دار کو اس کا حق دینا ہے، میرٹ سے ہٹ کر کوئی بات نہ کی جائے ، ایک لاکھ افراد کو قرضہ دینے سے روگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ اس سکیم کے تحت قرضہ واپس کرنے کا دورانیہ 8 سال ہو گا جبکہ پہلے سال کوئی قسط نہیں ادا کی جائے گی اور قرضے کی واپسی 7 سال میں قسطوں کی ادائیگی سے کی جائے گی، پہلے مرحلے میں 100 ارب روپے کے قرضے جاری کئے جائیں گے۔ انہوں نے واضح کیا کہ قرضہ سکیم میں گارنٹی سے متعلق شرائط کو مزید نرم کر دیا گیا ہے اور اب سرکاری افسران کے علاوہ ہر وہ شخص جس کی جائیداد قرضے کی رقم سے ڈیڑھ گناہ تک ہے گارنٹی دینے کا اہل ہے۔ انہوں نے کراچی میں سرکلر ریلوے شروع کرنے کا اعلان بھی کیا اور کہا کہ اس سلسلے میں ان کی جاپان کے سفیر سے بات چیت ہوئی ہے اور جلد ہی اس معاملے پر مثبت فیصلہ ہو گا ۔

مزید : حیدرآباد /اہم خبریں


loading...