مزنگ، مریض کے ساتھیوں نے شور سے منع کرنے پر حکیم کو فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا

مزنگ، مریض کے ساتھیوں نے شور سے منع کرنے پر حکیم کو فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(کرائم سیل)مزنگ کے علاقہ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے 50سالہ حکیم کو قتل کر دیا اور ایک شخص کو زخمی کر دیا جبکہ ملزمان موقع سے فرار ہو گئے۔پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کر کے مقتول کی نعش کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق 50سالہ محمد گلزار 4بچوں کا باپ تھا اور مزنگ کے علاقے کا رہائشی تھا۔مقتول کے بیٹے عثمان ،بھائی عامر اور اظہر اور دیگر اہل علاقہ نے نمائندہ\" پاکستان\" سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ رات 11بجے کے قریب ایک نامعلوم شخص ان کے والد سے دوائی لینے اور دم کروانے کے لیے آیا جسے انہوں نے کھانا بھی کھلایا بعد ازاں جب وہ جانے لگا تو اس کے دو اور ساتھی بھی آ گئے اور ہلہ گلہ کرنے لگے اتنے میں مقتول گلزار کا دوست امتیاز بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گیا اور دونوں نے انہیں شور مچانے سے روکا جس پر تینوں افراد نے ان پر فائرنگ کر دی ۔ایک گولی گلزار کے چہرے پر لگی جس کی وجہ سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا جبکہ امتیاز کے کندھے میں گولی لگی اور وہ شدید زخمی ہو گیا۔ ملزمان گائرنگ کرتے ہوئے موقعہ سے فرار ہو گئے۔اطلاع ملنے پر ریسکیو ٹیم نے زخمی امتیاز کو قریبی ہسپتال میں منتقل کیا جہاں اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے جبکہ پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر کے مقتول گلزار کی نعش کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا ہے ۔اور نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش کا آغاز کر دیا ہے۔

مزید :

علاقائی -