صوبے کے بیشتر بڑے ہوٹلوں میں ناقص اشیاءاور حرام گوشت فراہم کیا جاتاہے:بلال یٰسین

صوبے کے بیشتر بڑے ہوٹلوں میں ناقص اشیاءاور حرام گوشت فراہم کیا جاتاہے:بلال ...
صوبے کے بیشتر بڑے ہوٹلوں میں ناقص اشیاءاور حرام گوشت فراہم کیا جاتاہے:بلال یٰسین

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ویب ڈیسک) صوبائی وزیراخوراک بلال یاسین نے کہاہے کہ صوبے میں بڑے اور نامور ہوٹلوں و ریستورانوں میں حرام گوشت اور ناقص و استعمال شدہ اشیاءفراہم کی جارہی ہیں، لاہور کے پوش علاقوں میں مہنگے ترین ہوٹلوں میں لوگوں کو باسی، ناقص کھانا فراہم کای جاتا ہے۔ تفصیلات کے مطابق انہوں نے کہا کہ شہر کے بڑے ہوٹلوں میں استعمال شدہ مشروبات اور کھانے بھی دوبارہ سے گاہکوں کو سجا کر پیش کردئیے جاتے ہیں۔ لاہور اور پنجاب کے دیگر اظلاع میں گدھوں سمیت مختلف جانوروں کا گوشت بھی پکڑا جو دکانوں پر فروخت کیا جاتا رہا، مہنگے ہوٹلوں کے باورچی خانوں کے فریزروں میں مالکان کے کتوں کے لئے بچی کھچی ہڈیاں اور دیگر چیزیں بھی رکھی جاتی ہیں جبکہ ان ہوٹلوں میں ناقص اور استعمال شدہ آئل بھی کھانے پکانے کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔

آرمی ایکٹ 1952 ترمیمی بل کے مطابق فوجی عدالتیں 2 سال بعد ختم ہو جائیں گی
 متعدد ریسٹورنٹس اور میکڈونلڈ ودیگر غیر ملکی کمپنیوں کو ناقص کھانا اور اشیائے خوردونوش فراہم کرنے پر سیل بھی کیا گیا۔ بلال یٰسین نے بتایا کہ بڑے ہوٹلوں کے خلاف کارروائی کے نتیجے میں ہمیں کس طرح کا دباﺅ برداشت کرناپڑتا ہے اور کیا سننا پڑتا ہے یہ ہم ہی جانتے ہیں۔ ان کاکہنا تھا کہ بدقسمتی سے لوگ حرام جانوروں کا گوشت بیچنے سے باز نہیں آئے ہم نے لوگوں کو گدھے ذبح کرتے ہوئے رنگھے ہاتھوں گرفتار کیا۔

مزید :

لاہور -