سعودی عرب میں خواتین اینکرز کے لیے عبایا اور سکارف اوڑھنا لازم قرار

سعودی عرب میں خواتین اینکرز کے لیے عبایا اور سکارف اوڑھنا لازم قرار
سعودی عرب میں خواتین اینکرز کے لیے عبایا اور سکارف اوڑھنا لازم قرار

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

جدہ (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی براڈکاسٹنگ کارپوریشن نے ٹی وی چینلز کی اینکرز کے لیے ڈریس کوڈ کے نفاذ کا اعلان کردیاہے جس کے مطابق خواتین اینکرز کو سیاہ رنگ کی عبایا اورا سی رنگ کا سکارف اوڑھنا ہوگا تاہم خواتین اپنے اپنے چینل کا کارپوریٹ کلر عبایوں پر پٹی یا ربن کی صورت میں زیبائش کے لیے استعمال کر سکیں گی۔
اس تجویز میں یہ بھی مطالبہ کیا کیا گیا ہے کہ جو ٹی وی اینکر اس مجوزہ ڈریس کوڈ کی پابندی میں ناکام رہیں انہیں ایک ہزار سعودی ریال کا جرمانہ کیا جائے تاہم معلوم ہوا ہے کہ شوری کونسل نے اس موضوع پر واضح اختلاف کی وجہ سے فیصلہ موخر کر دیا ہے۔
عرب میڈیا کے مطابق بعض مبصرین کاخیال ہے کہ سعودی براڈکاسٹنگ کارپوریشن کا یہ فیصلہ صرف نئے سال کی آمد کے سلسلے میں تھا جبکہ بعض کا کہنا ہے کہ فیصلہ شوری کونسل کی طرف سے ڈریس کوڈ کے بارے میں ممکنہ اقدامات کو روکنے کی ایک کوشش ہے۔
واضح رہے شوری کونسل میں خاتون رکن کی طرف سے پیش کی گئی تجویز پر شوری کونسل میں اختلاف رائے پایا جاتا ہے۔ شوری کونسل کے متعدد ارکان نے اس تجویز کو غیر قانونی قرار دیا ہے کیونکہ پہلے سے ہی سعودی خواتین کے لیے ایک ڈریس کوڈ نافذ ہے۔
یادرہے کہ ماضی میں ایسا ہی فیصلہ پاکستان میں ہوچکاہے ، ڈریس کوڈ جنرل ضیاءالحق کے دور میں نافذ کیا گیا تھا جس کے تحت خواتین ٹی وی اینکرز کے لیے دوپٹہ اوڑھنا لازمی قرار دیا گیا تھا۔