جنوبی افریقہ سے بھتہ کیلئے فون، کراچی کے 27 ڈاکٹر روپوش، کلینک بند

جنوبی افریقہ سے بھتہ کیلئے فون، کراچی کے 27 ڈاکٹر روپوش، کلینک بند
جنوبی افریقہ سے بھتہ کیلئے فون، کراچی کے 27 ڈاکٹر روپوش، کلینک بند

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (ویب ڈیسک) کراچی کے ڈاکٹروں کو ساﺅتھ افریقہ سے دھمکی آمیز فون کالز اور بھتہ کے لئے ای میلز موصول ہو رہی ہیں جس کے باعث سرکاری ہسپتالوں کے مزید 27 میسحاﺅں نے روپوشی اختیار کرلی ہے۔ گزشتہ 6 ماہ کے دوران ڈاکٹروں سے پروٹیکشن منی کے نام پر بھتے کی پرچیوں میں ایک بار پھر اضافہ ہوگیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق ڈاکٹروں نے بھتہ اور ای میلز کے خوف سے نجی کلینک بند کردئیے ہیں جبکہ پی ایم ڈی سی میں بیرون ملک جانے کے سرٹیفکیٹ کے حصول کے لئے درخواستیں جمع کرادی ہیں۔ دوسری جانب پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر مرزا علی اظہر کا کہنا ہے کہ مرزا نامی آئی ڈی سے بھتے کی ای میلز موصول ہورہی ہیں جبکہ ڈاکٹروں کے قتل کے خلاف کسی سیاسی جماعت نے آواز بلند کی نہ دھرنا دیا،اگر یہی سلسلہ جاری رہا تو احتجاجی تحریک چلانے پر مجبور ہوں گے۔
 مقامی اخبار نئی بات کے مطابق شہر کے نجی و سرکاری ہسپتالوں کے 27 ڈاکٹروں کو ساﺅتھ افریقہ سے بھتے کے لئے فون کالز اور ای میلز موصول ہوئی ہیں جس کے نتیجے میں ڈاکٹروں میں خوف کی لہر دوڑ گئی ہے اور مذکورہ ڈاکٹروں نے اپنے کلینک بند کردئے ہیں اور ہسپتالوں سے غیر معینہ مدت کے لئے رخصت لے کر روپوشی اختیار کرلی ہے۔
 ڈاکٹر مرزا علی اظہر نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ اس وقت شہر کے تمام ہسپتالوں میں خدمات انجام دینے والے ڈاکٹروں کو بھتے کے لئے فون کالز اور ای میلز موصول ہورہی ہیں۔

مزید :

کراچی -