کبھی ڈکٹیشن نہیں لی،یہ کہنا غلط ہے کہ دھرنا کسی کے کہنے پر ختم کیا: عمران خان

کبھی ڈکٹیشن نہیں لی،یہ کہنا غلط ہے کہ دھرنا کسی کے کہنے پر ختم کیا: عمران خان
کبھی ڈکٹیشن نہیں لی،یہ کہنا غلط ہے کہ دھرنا کسی کے کہنے پر ختم کیا: عمران خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تھریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ میں نے کبھی کسی معاملے پر کسی سے ڈکٹیشن نہیں لی اور یہ تاثر بھی غلط ہے کہ دھرنا کسی کے کہنے پر ختم کیا گیا بلکہ سانحہ پشاور کے بعد قومی یکجہتی کے اظہار کیلئے وقت کا تقاضا تھا کہ دھرنا ختم کر دیا جائے۔ ہیتھرو ایئر پورٹ پر میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ جب تک دھاندلی کی تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن قائم نہیں کیا جاتا ہم اسمبلی میں واپس نہیں جائیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ اگر تحقیقات میں دھاندلی ثابت نہ ہوئی تو حکومت میں کوئی فرق نہیں آئے گا اور موجودہ حکومت ہی کام کرتی رہے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ پیر کے روز تک این اے 122 میں دھاندلی سے متعلق عدالتی فیصلہ آ جائے گا اور اس پہلے دیا جانے والا ہر بیان میچ فکسنگ ہے۔ ان کا کہنا تھا چار ماہ تک جاری رہنے والے دھرنے کی وجہ پاکستان میں واضح تبدیلی آئی ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -