بلا تاخیر انصاف کی فراہمی سے عدلیہ پر عوام کا اعتماد بحال ہو گا: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

بلا تاخیر انصاف کی فراہمی سے عدلیہ پر عوام کا اعتماد بحال ہو گا: چیف جسٹس ...

لاہور،کامونکے،گوجرانوالہ (نامہ نگار خصوصی + نامہ نگار+بیورو رپورٹ )چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا ہے کہ ججز صاحبان انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے سائلین کو بروقت اور شفاف انداز میں انصاف فراہم کریں‘ مہذب معاشروں میں انصاف کی فراہمی کو بنیادی اہمیت حاصل ہے‘ انصاف کی فراہمی کے لئے جج صاحبان اور وکلاء اپنا مثبت کردار ادا کریں‘ بلا تاخیر انصاف کی فراہمی سے عدلیہ پر عوام کا اعتماد بحال ہوگا‘ سائلین کی بات سنیں اور قانون کے مطابق میرٹ پر ایمانداری سے فیصلے کریں اور کسی بھی کیس کا فیصلہ سنانے سے قبل فریقین کو سننا ضروری ہے تاکہ کسی کے دل میں بھی خلش نہ رہے کہ اس کے ساتھ انصاف نہیں کیاگیا۔ وہ کامونکی میں جوڈیشل کمپلیکس کی تعمیرکی افتتاحی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد حمید ڈار‘ طارق افتخار رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ‘ ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج گوجرانوالہ حبیب اللہ عامر‘ کمشنر گوجرانوالہ ڈویژن محمد عامر جان‘ آر پی او محمد طاہر‘ سی پی او وقاص نذیر‘ ایس ایس پی آپریشنز کیپٹن (ر) علی ضیاء‘ صدر بار خالد لطیف چوہدری اور وکلاء کی کثیر تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی۔چیف جسٹس نے کہا کہ حقدار کو فوری انصاف سے معاشرہ امن اور ترقی کی طرف گامزن ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ججز اور وکلاء مل کر ایسے اقدامات کریں کہ حقدار کو فوری اور ارزاں انصاف میسر آسکے۔ اس سلسلہ میں وکلاء اورجج محنت کررہے ہیں جو قابل ستائش ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پرانے اور نئے مقدمات جلد نمٹائے جائیں گے۔ انہوں نے وکلا ء اور جج صاحبان سے کہا کہ وکلاء عدالت اور عدالت وکلاء کی عزت و احترام کریں دونوں کا باہمی تعاون انصاف کی فراہمی میں انتہائی اہم ہے کیونکہ دونوں انصاف کے شعبے سے منسلک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انصاف کی فراہمی کے لئے بہترین انفراسٹرکچر ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی عمارتوں کی تعمیر سے صرف یہ غرض نہیں کہ وہاں پر ججز کو بٹھا دیا جائے بلکہ وہاں پر لوگوں کو انصاف میسر آنا چاہےئے ۔ انہوں نے کہا کہ بار اور بنچ ایک ہی خاندان اور دونوں کی منزل انصاف کی فراہمی ہے۔ انہوں نے ضلعی انتظامیہ کے افسران سے کہا کہ جوڈیشل کمپلیکس کامونکی کی عمارت مقررہ مدت میں اور معیاری تعمیر کی جائے۔انہوں نے ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج حبیب اللہ عامر اور صدر بار چوہدری خالد لطیف ودیگر تحصیلوں کے صدور اور وکلاء صاحبان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کمشنر گوجرانوالہ ڈویژن محمد عامر جان‘ آر پی او محمد طاہر کا شکریہ ادا کیاکہ انہوں نے ایڈیشنل سیشن جج سیالکوٹ پرحملہ کے مجرمان کو گرفتار کرنے میں انتہائی ذمہ داری کا مظاہرہ کیا ہے۔انہوں نے شاہد مظفر خان کی وفات پر اظہار افسوس اور لواحقین سے اظہار ہمدردی کیا۔اس موقع پر کمشنر گوجرانوالہ ڈویژن محمد عامر جان اور ایکسیئن پراونشل بلڈنگ نے چیف جسٹس کو پراجیکٹ کے متعلق بریفنگ دی۔ کمشنر نے یقین دلایا کہ پراجیکٹ کو مقررہ مدت میں اور معیار کے مطابق تعمیر کرایا جائے گا۔ اس پراجیکٹ پر 245 ملین روپے لاگت آئے گی جبکہ اس سلسلہ میں 2 کروڑ20 لاکھ روپے جاری ہوچکے ہیں۔اس منصوبہ کے تحت 2 ایڈیشنل سیشن کورٹس‘4 سول کورٹس‘2 رہائشیں گریڈ20 اور اوپر ‘ 4 رہائشیں گریڈ 18 اور19‘چار رہائشیں گریڈ11 تا14 اور8 رہائشگاہیں گریڈ1 تا 10 ملازمین کے لئے تعمیر کی جائیں گی۔

مزید : صفحہ آخر