حکمران نئے سال عوامی مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں: اپوزیشن، انتخابی منشور پر عمل درآمد جاری ہے: حکومت

حکمران نئے سال عوامی مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں: اپوزیشن، انتخابی ...

لاہور(نمائندہ خصوصی ،خبر نگار خصوصی ) سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ نئے سال میں حکومت کی اولین ترجیحات عوامی مسائل کا فوری حل ‘ ملک سے دہشت گردی کا مکمل خاتمہ ‘ بجلی و سوئی گیس کی لوڈ شیڈنگ سے نجات اور عوام کوفوری ریلیف کی فراہمی ہونی چاہئے اور حکومت کو عام انتخابات کے وقت عوام سے کئے گئے وعدوں کو بھی پورا کرنے کی طرف توجہ دینی چاہئے جبکہ حکمران جماعت کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ ہماری حکومت نے الیکشن کے وقت کئے گئے وعدوں کو کافی حد تک پورا کردیا ہے جو وعدے رہ گئے ہیں ان پر بھی کام جاری ہے ۔پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ حکومت کو خود اپنا احتساب کرنا چاہئے کیونکہ عام انتخابات سے قبل مسلم لیگ (ن) نے اعلان کیا تھا کہ ہم حکومت میں آئے تو اپنی حکومت کے صرف ابتدائی چھ ماہ کے اندر ہی بجلی کی لوڈ شیڈنگ کو ختم کردیں گے لیکن وہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ کو ختم کر سکے ہیں بلکہ اب تو عوام کو گھروں میں سوئی گیس بھی میسر نہیں ہے اور سکولوں کے بچے بغیر ناشتے کے سکول جانے پر مجبور ہیں اس لئے حکومت کو اس سال اپنے وعدوں کو پورا کرنا چاہئے وگرنہ عوام الیکشن کے وقت مسلم لیگ کا خود ہی احتساب کریں گے۔تحریک انصاف پنجاب کے آرگنائزر چودھری محمد سرور نے کہاکہ ملک میں فلاحی نظام حکومت قائم ہونا چاہئے اگر حکمرانوں نے اپنا قبلہ درست نہ کیا تو پھر عوام اپنے ووٹ کی طاقت سے ٹھیک کردیں گے ۔جے یو آئی کے مرکزی رہنما مولانا امجد علی خان نے کہا کہ حکومت نے عوامی وعدے پورے نہ کئے تو پھر عوام سے اچھا احتساب کون کر سکتا ہے۔ایم کیو ایم کے رہنما ڈاکٹر فاروق ستا ر نے کہا کہ ہمارا منشور واضح ہے کہ سرمایہ درانہ اور جاگیردرانہ نظام کا مکمل خاتمہ ہونا چاہئے تاکہ عام آدمی کو ایوانوں میں جانے کا موقع ملے۔عوامی تحریک کے مرکزی رہنما خرم نواز گنڈا پور کا کہنا تھا کہ عوام کو حکمرانوں سے توقعات وابستہ نہیں کرنی چاہئے ان کا ایجنڈا عوامی فلاح و بہبود نہیں بلکہ اپنے ذاتی کاروبار کو عروج تک پہنچانا ہے۔حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کے چیرمین راجہ ظفرالحق کاکہنا تھا کہ وزیراعظم نے ملک بھر میں صحت کارڈ سکیم کا اجراء کردیا ہے، 2018تک بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا مسلہء بھی حل کردیا جائے گا ۔

مزید : صفحہ آخر