افغان نیشنل آرمی کا ایم آئی 17ہیلی کاپٹر لوگر میں گر کر تباہ ، 3 فوجی ہلاک، 2 زخمی

افغان نیشنل آرمی کا ایم آئی 17ہیلی کاپٹر لوگر میں گر کر تباہ ، 3 فوجی ہلاک، 2 ...
افغان نیشنل آرمی کا ایم آئی 17ہیلی کاپٹر لوگر میں گر کر تباہ ، 3 فوجی ہلاک، 2 زخمی

  

کابل(آئی این پی) افغان نیشنل آرمی کاایم آئی 17 ہیلی کاپٹر صوبہ لوگر میں گر کر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں 3 فوجی ہلاک اور2 زخمی ہوگیا، سیکورٹی فورسز کے آپریشن میں 21طالبان جنگجو ہلاک اور 11 زخمی ہوگئے ،وزارت داخلہ کے ترجمان صدیق صدیقی کا کہنا ہے کہ صوبہ ننگرہار میں داعش کے خلاف جاری زمینی اور فضائی آپریشن کے دوران 144جنگجو ہلاک اور 58 زخمی ہوچکے ہیں ،ادھر طالبان نے اپنے اعلی رہنما مولوی محمد حقانی کی موت کی تصدیق کردی۔اتوار کو افغان میڈیا کے مطابق صوبہ لوگر میں افغان نیشنل آرمی کا ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں 3فوجی ہلاک اوردو زخمی ہوگیا۔وزارت دفاع نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ ہیلی کاپٹر لوگر میں گر کر تباہ ہوا۔حادثے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ترجمان دولت وزیری کا کہنا ہے کہ ایم آئی 17ہیلی کاپٹر فنی خرابی کے باعث گر کر تباہ ہوا جس کے نتیجے میں تین فوجی ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔صوبائی حکا م کا کہنا ہے کہ ہیلی کاپٹر شکر قلعہ کے علاقے میں گرکر تباہ ہوا۔ملک کے مختلف علاقوں میں سیکورٹی فورسز کے آپریشن میں 21طالبان جنگجو ہلاک اور 11 زخمی ہوگئے۔ وزارت داخلہ کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران افغان سیکورٹی فورسز نے صوبہ فریاب ،سرائے پل، جاؤ زجان، قندھار، ارزگان،غزنی،پکتیکا،پکتیا،ہرات اور ہلمند میں آپریشن کیا جس میں 21 طالبان جنگجو ہلاک اور 11 زخمی ہوگئے ۔بیان میں یہ نہیں بتایا گیاکہ آپریشن کے دوران سیکورٹی فورسز کا کتنا نقصان ہوا۔ادھر مشرقی صوبہ ننگرہار میں داعش کے حامی جنگجوؤں کے خلاف افغان فورسز کا زمینی اور فضائی آپریشن جاری ہے ۔وزارت داخلہ نے تصدیق کی ہے کہ صوبہ ننگرہار میں 22دسمبر 2015 سے داعش کے خلاف جاری آپریشن میں ابتک 144جنگجو ہلاک ہوچکے ہیں۔میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے ترجمان وزارت داخلہ صدیق صدیقی نے بتایا کہ آپریشن صوبے کے مختلف علاقوں میں کیے گئے جس میں 144جنگجو ہلاک اور 58زخمی ہوگئے ۔انکا کہنا تھاکہ آپریشن ملک سے داعش کو جڑ سے اکھاڑ پھنکنے تک جاری رہے گا۔درجنوں داعش جنگجو صوبہ غزنی ،ارزگان،ہلمند اور سرائے پل میں آپریشن کلین اپ کے دوران مارے گئے ۔دوسری جانب افغان طالبان نے اپنے رہنما مولوی حقانی کے قدرتی وجوہات کے باعث موت کی تصدیق کردی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق طالبان عسکریت پسندوں نے اپنے اعلی رہنما سید محمد حقانی کی موت کی تصدیق کردی ہے ۔مولوی حقانی 90 کے وسط سے طالبان گروپ کے قیام کے بعد سے طالبان کی قیادت کے اعلی لیڈروں کے طور پر جانے جاتے ہیں۔طالبان کے مطابق مولودی حقانی وزارت خارجہ کے سابق ڈپٹی تھے ۔

مزید : بین الاقوامی