ترکی نے بھی ناقابلِ یقین اقدام اُٹھا لیا، خون کی ندیاں بہادیں، اتنے لوگ مار ڈالے کہ دنیا دنگ رہ گئی

ترکی نے بھی ناقابلِ یقین اقدام اُٹھا لیا، خون کی ندیاں بہادیں، اتنے لوگ مار ...
ترکی نے بھی ناقابلِ یقین اقدام اُٹھا لیا، خون کی ندیاں بہادیں، اتنے لوگ مار ڈالے کہ دنیا دنگ رہ گئی

  

انقرہ(مانیٹرنگ ڈیسک)شام میں جاری جنگ کے اثرات ترکی پر بھی ایک عرصے سے مرتب ہو رہے ہیں مگر ترک حکومت کی طرف سے کوئی بڑا اقدام نہیں اٹھایا گیا تھا مگر اب اس نے ایک ایسا خونریز اقدام اٹھایا ہے کہ ایک ہی ہلے میں 300کرد باغیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ بین الاقوامی خبررساں ادارے ’’رائٹرز‘‘ کی رپورٹ کے مطابق ترک فوج نے اپنی ویب سائٹ پر ایک بیان جاری کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ فوج نے صوبوں سیرنک اور دیارباقرکے علاقوں میں کردباغیوں کے خلاف کارروائیاں کی ہیں۔ ضلع سیزر میں 215، سلوپی میں 30اور ضلع سر میں 55کرد باغیوں کو ہلاک کیا گیا ہے۔ہلاک ہونے والے تمام باغیوں کا تعلق کردستان ورکرز پارٹی سے تھا۔

رپورٹ کے مطابق ترک افواج شام اور عراق کے ساتھ ملحقہ بارڈر پر اپنے آپریشنز میں تیزی لا رہی ہیں۔ بارڈر کے ساتھ واقعے یہ علاقے کردستان ورکرز پارٹی کے گڑھ ہیں جسے ترکی اور نیٹو ممالک دہشت گرد گروپ قرار دے چکے ہیں۔ترکی کے صدر رجب طیب اردگان بھی کرد جنگجوؤں کے خاتمے تک آپریشن جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کر چکے ہیں۔رپورٹ کے مطابق جب سے ترک فوج نے ملک کے ان جنوب مشرقی علاقوں میں آپریشن شروع کیا ہے ایک لاکھ سے زائد لوگ بے گھر ہو چکے ہیں اور کاروبار تباہ ہو چکے ہیں۔ ملک کا یہ علاقہ پہلے ہی باقی ملک سے زیادہ پسماندہ اور غربت کی دلدل میں دھنسا ہوا ہے اور آپریشن شروع ہونے سے یہاں بے روزگاری کی شرح کہیں زیادہ بلند ہو چکی ہے۔

مزید : بین الاقوامی