پبلک سروس کمیشن کے احکامات معطل 21 سالہ لڑکی کو امتحان کی اجازت

پبلک سروس کمیشن کے احکامات معطل 21 سالہ لڑکی کو امتحان کی اجازت

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس وقاراحمدسیٹھ نے پبلک سروس کمیشن کے احکامات کو معطل کرتے ہوئے21سالہ خاتون کو پی ایم ایس کے امتحان میں بیٹھنے کی اجازت دے دی اورچیئرمین اورکنٹرولر سے جواب مانگ لیافاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز ملک اجمل خان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائرسیمااحسان کی رٹ پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ پبلک سروس کمیشن نے پی ایم ایس کی پوسٹیں مشتہرکیں جس کے لئے درخواست گذار نے21سال4دن کی عمر کے ساتھ اپلائی کیاجبکہ امتحان میں شامل ہونے کے لئے عمرکی حد21تا30سال تھی اوردرخواست گذار کو باقاعدہ رول نمبرسلپ جاری ہوا اورسکریننگ ٹیسٹ بھی کوالیفائی کیاتاہم تحریری امتحان کے لئے درخواست گذار کو کم عمری کاکہہ کرروک دیاگیاہے جو کہ غیرقانونی اورغیرآئینی اقدام ہے لہذادرخواست گذار کو پبلک سروس کمیشن کے امتحان میں بیٹھنے کی اجازت دی جائے فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد درخواست گذار کو پی ایم ایس کے تحریری امتحان میں بیٹھنے کی اجازت دیتے ہوئے کمیشن سے جواب مانگ لیاہے ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -