ریفنڈز جلد ادا کئے جائیں : عرفان اقبال شیخ ، تنو یر صوفی ، شاہزیب اکرم

ریفنڈز جلد ادا کئے جائیں : عرفان اقبال شیخ ، تنو یر صوفی ، شاہزیب اکرم

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (کامرس رپورٹر )پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے کہا ہے کہ سیلز ٹیکس، انکم ٹیکس ریفنڈز نہ ملنے سے برآمدکنندگان ملکی اشیاء بیرون ملک برآمد ات میں عدم دلچسپی کا اظہار کررہے ہیں جو برآمدات میں کمی کی ایک وجہ بن رہی ہے ۔ ملکی برآمدات کمی کا شکار ہونے سے تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے۔ایف بی آر کے ذمے تاجروں اور صنعتکاروں کے اربوں روپے واجب الادا ہیں جس کے باعث ان کو سرمایہ کی شدید قلت کا سامنا ہے اور درجنوں فیکٹریاں بند ہونے سے بیروزگاری کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے ۔ حکومت گزشتہ تین سالوں سے تاجر وصنعتکاروں کو سیلز ٹیکس ریفنڈز کی ادائیگی کا وعدہ کر رہی ہے سابق وزیراعظم نواز شریف نے ٹیکسٹائل سیکٹرکو ریلیف دینے کیلئے180ارب روپے کے ریلیف پیکیج کا اعلان بھی کیا مگر اسکی ادائیگی بھی ابھی تک شروع نہیں ہو سکی ہے۔ریفنڈز جلد از جلد ادا کئے جائیں۔ان خیالات کا اظہارچیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ نے سیئنر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئرمین خواجہ شاہزیب اکرم کے ہمراہ تاجروں اور صنعتکاروں کے وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔


چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ کاروباری طبقہ سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس ریفنڈز اور ڈیوٹی ڈرا بیک میں تاخیر جیسے مسائل کی موجودگی میں اپنا کردار ادا نہیں کر پا رہا۔ تجارتی خسارے پر قابو صرف اور صرف برآمدات بڑھا کر ہی کیا جا سکتا ہے اور برآمدات بڑھانے کے لئے ضروری ہے کہ برآمدکننگان کے ریفنڈز اور ڈیوٹی ڈرا بیک جیسے مسائل فوری حل کیے جائیں کیونکہ انکی موجودگی میں برآمدات ہرگز نشونما نہیں پا سکتیں۔پیاف کے عہدیداران نے ایڈوائز ٹو پرائم منسٹر اور وزیراعظم پاکستان سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ اور ایف بی آر سے تاجر وصنعتکاروں کے اربوں کے سیلز ٹیکس ریفنڈز کی ادائیگی کو یقینی بنوائیں۔

مزید :

کامرس -