جنوبی کشمیر کے شوپیاں ضلع میں متعدد دیہات میں سرچ آپریشن شروع

جنوبی کشمیر کے شوپیاں ضلع میں متعدد دیہات میں سرچ آپریشن شروع

سری نگر(کے پی آئی) بھارت فورسز نے جنوبی کشمیر کے شوپیاں ضلع میں متعدد دیہات میں سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق منگل کی صبح فورسز نے شوپیاں کے کاچڈورہ، چکورہ ، باٹاپور، لنڈورہ، گاہنڈ، ہرمین ، مرا پور، بامن ، منتری بھگ اور دیگر متعلقہ علاقوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی کارروائی شروع کردی ہے۔لیتہ پورہ اونتی پورہ میں 36گھنٹوں بعد ایک اور نوجوان کی لاش ملی ہے قبل ازیں بھارتی فوج سے مقابلے میں دو مجاہدین شہید ہو گئے تھے ۔ شہدا کی یاد میں پانپور، پلوامہ،ترال ، اونتی پورہ اور شوپیان میں مکمل ہڑتال کی وجہ سے معمولات زند گی بری طرح متاثر رہی ہے جبکہ علاقے میں انٹر نیٹ سروس کو تیسرے روز بحال نہیں کیا گیا اور باہمولہ بانہال ٹرین سروس بھی بند رہی۔دربہ گام پلوامہ میں کئی مقامات پر فورسز نے ناکے لگائے تھے جس کے دوران مذکورہ گاؤں کے بالکل قریب ہی نوجوانوں اور فورسز میں شدید ٹکراؤ ہوا۔مظاہرین نے فورسز پر اس وقت پتھراؤ کیا جب انہیں روکا گیا جس کے واب میں فورسز نے پہلے ہوائی فائرنگ کی اور بعد میں براہ راست بھی فائرنگ کی جس کے نتیجے میں منظور احمد راتھر ساکن ٹہاب پلوامہ کے چہرے پر گولی لگی اور اسے نازک حالت میں پہلے پلوامہ ضلع اسپتال اور بعد میں سرینگر منتقل کیا گیا۔اس دوران پلوامہ ضلع ہیڈکوارٹر میں مکمل ہڑتال کے بیچ جب فورسز اہلکار واپس جارہے تھے تو ان پر پتھراؤ کیا گیا جس کے جواب میں فورسز نے شلنگ کی جس کے بعد طرفین میں کافی وقت تک جھڑپیں ہوئیں۔ادھرشوپیان ضلع میں بھی مکمل ہڑتال رہی۔صبح کے وقت اگرچہ مارکیٹ کھل گیا تاہم بعد میں نوجوانوں کی ٹولیاں سڑکوں پر نکل آئیں نعرے بازی کر کے وہاں سے گزرنے والی پولیس گاڑیوں پر زبردست پتھراؤ کیا جس کی وجہ سے افرا تفری مچ گئی اور دکانیں بند ہوگئیں۔

بٹہ پورہ چوک ،گول چکری اور علیالپورہ میں فورسز اور مظاہرین کے بیچ جھڑپوں کا سلسلہ کافی دیر تک جاری رہا۔پولیس فورسز نے مظاہرین کو منتشرکرنے لئے آنسو گیس کے گولے داغے ۔شوپیان میں بھی انٹر نیٹ سروس معطل رہی۔

مزید : عالمی منظر