منشیات کے مریضوں کی علاج گاہ کو ناقص کارکردگی پر بند کر دیا گیا

منشیات کے مریضوں کی علاج گاہ کو ناقص کارکردگی پر بند کر دیا گیا

لاہور (جنرل رپورٹر)پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن نے منشیات کے مریضوں کی علاج گاہ کو صحت کے کم سے کم معیارات کا نفاذ نا کرنے پر بند کردیا۔جبکہ ضلعی انتظامیہ نے مریضوں کو شہر کے دوسرے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا۔تفصیلات کے مطابق پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن کی تین رکنی ٹیم نے ایڈشنل ڈائریکٹر (شکایات)ڈاکٹرشاہد محمود کی سربراہی میں عامر چشتی ہسپتال شادباغ کا معائنہ کیاتو پتہ چلا کی تیس بستروں کے ہسپتال میں 280 سے زائد منشیات کے عا دی مریضوں کا علاج کیا جا رہا ہے۔ہسپتال میں صحت کی بنیادی سہولتوں کے علاوہ ضروریاتِ زندگی کی بنیادی سہولیات بھی موجود نہ تھیں ۔ ہسپتال میں ایک سٹاف ممبر کے علاوہ مریضوں کی دیکھ بھال کے لئے کوئی ڈاکٹرموجود نہ تھا جبکہ ہسپتال کا ہی ایک مریض بطورِ گارڈ ڈیوٹی سر انجام دے رہا تھا۔ہسپتال میں مریضوں کے طبی معائنے کے آلات ،ادویات موجود نہ تھے ۔ مریضوں کے طبی ونفسیاتی معائنے، ادویات کے نسخے اور ان کے داخلی و خارجی ریکارڈ کے اندراج کا کوئی منظم طریقہ کار موجود نہ تھا اس کے علاوہ انفیکشن کنٹرول، سیفٹی اور صحت و صفائی کا کوئی انتظام موجود نہ تھا۔تحقیقات اور ہسپتال کے معائنے کے بعد پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن نے ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی مدد سے عامر چشتی ہسپتال کو سر بمہر کر تے ہوئے ہسپتال کے خلاف مزیدقانونی کارروائی کا حکم جاری کر دیا جبکہ مر یضوں کو ضلعی انتظامیہ نے شہر کے دوسرے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1