میں قانون کالاڈلا ، این آر او کی خوشبو بھی آئی تو سڑکوں پر ہونگے : عمران خان

میں قانون کالاڈلا ، این آر او کی خوشبو بھی آئی تو سڑکوں پر ہونگے : عمران خان

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) انسداد دہشت گردی عدالت نے پی ٹی وی حملہ کیس سمیت 4 مقدمات میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی ضمانت کی درخواستیں منظور کرلیں۔اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں عمران خان کے خلاف 2014 کے دھرنے کے بعد دائر کیے گئے پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ، ایس ایس پی تشدد سمیت 4 مقدمات کی سماعت ہوئی۔عمران خان آج پانچویں مرتبہ پیش ہوئے اور وکلا کے دلائل سننے کے بعد فاضل جج نے چیئرمین تحریک انصاف کی ضمانت پر فیصلہ محفوظ کرلیا جو ڈھائی بجے سنایا گیا۔ضمانت منظور ہونے کے بعد عدالت کیباہر میڈیا سے گفتگو میں عمران خان کا کہنا تھا کہ میں لاڈلا نہیں، سپریم کورٹ نے کہا کہ میں صادق اور امین ہوں، میں قانون کا لاڈلا ہوں اور قانون پرعمل کرتا ہوں، مجھ پر مقدمات اس لیے ہیں کہ میں ان کا مقابلہ کررہا ہوں۔

ضمانت

دوسرا انٹرو

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک ،آئی این پی )چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہناہے کہ شریف برادران اپنی چوری بچانے دوسرے ملک گئے لیکن اب یہ کہیں بھی چلے جائیں قوم ان کا این آر او قبول نہیں کرے گی۔انسداد دہشت گردی کی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں امریکی صدر کے بیان پر عمران خان نے کہاکہ ٹرمپ کو افغانستان جنگ کا کوئی علم نہیں، اسے پاکستان کے دشمنوں نے بریف کیا، جو حقائق جانتا ہے وہ ٹرمپ کے بیان کو ماننے کو تیار نہیں۔ اس جنگ میں پاکستان کا نقصان ہوا، ہماری معیشت کو 100 ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان ہوا، 70 ہزار لوگ مارے گئے۔میں نے ہمیشہ کہا کہ یہ ہماری جنگ نہیں، اس میں نہیں جایا جائے، آج بدقسمتی ہے جو ڈالر ٹرمپ گنوا رہا ہے اسی ڈالرز نے تباہی مچاہی، اب ذلت بھی مل رہی ہے، پاکستان نے قربانیں بھی دیں، اپنا نقصان کرایا لیکن اس کے بعد پھر ہمیں ذلیل کیا جارہا ہے۔امریکی صدر میں عقل کی کمزوری ہے، وہ ہمارے دشمنوں کے ایجنڈے پر چل رہا ہے، ہمیں اب سبق سیکھنا چاہیے کہ پیسے لیکر کسی اور کی جنگ لڑیں گے تو ذلت اور تباہی ہے۔ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا اگر عدالت نے گرفتاری کا حکم دیا تو گرفتار ہوں گا۔عمران خان نے کہا کہ دونوں بھائی سعودی عرب گئے، ان کو اتنی سی بھی شرم ہو تو ڈوب جائیں، ساری قوم کے سامنے ہے کہ دونوں چوری بچانے کے لیے دوسرے ملک گئے، یہ این آر او لینے گئے لیکن اب جہاں مرضی چلے جائیں انہیں پتا ہونا چاہے کہ قوم کو پہلا این این آر او سمجھ نہیں آیا، سپریم کورٹ نے این آر او کو رد کیا، آج قوم کھڑی ہے، ان کا کوئی این آر او قبول نہیں کرے گی۔ اب یہ باہر کی قوت کو کہہ رہے کہ ہمیں بچاؤ، یہ قوم کو بھیڑ بکریاں سمجھتے ہیں، اب اگر این آر او کی خوشبو بھی آئی تو قوم سڑکوں پر نکلے گی اورشاہد خاقان کی حکومت برداشت نہیں کرسکے گی۔تحریک انصاف الیکشن کے لیے تیار ہے بلکہ جلد الیکشن چاہتی ہے، حالات سب کے سامنے ہیں، ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں، شاہد خاقان کٹھ پتلی وزیراعظم ہیں، انہوں نے اسحاق ڈر کو ملک سے باہر بھگادیا، حکومت کا کام چوروں کو بچانا رہ گیا ہے اور کوئی کام نہیں ہورہا، ڈالر اوپر جارہا ہے اور معاشی حالات خراب ہیں، قرض بڑھتے جارہے ہیں۔عمران خان نے اپنی ٹوئٹ میں بالی وڈ کی فلم ’مائی نیم از خان‘ میں شاہ رخ خان کے ڈائیلاگ کا سہارا لیا اور لکھا کہ ’میرا نام خان ہے اور میں دہشت گرد نہیں۔چیئرمین تحریک انصاف نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ نے چوروں کے بعد مجھے صادق اور امین قرار دیا۔نائن الیون کے بعد دہشت گردی کے جنگ میں ہمیں حکمران لے گئے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کا بہت نقصان ہوا۔عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کہتے ہیں انہیں اقامے پر نکالا، اقامہ ہی تو منی لانڈرنگ کا طریقہ تھا، اس لیے قبل از وقت انتخابات ضروری ہے تاکہ نیا مینڈیٹ آئے اور کام حکومت کرے۔

عمران خان

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک ،آئی این پی ) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہناہے کہ شریف برادران اپنی چوری بچانے دوسرے ملک گئے لیکن اب یہ کہیں بھی چلے جائیں قوم ان کا این آر او قبول نہیں کرے گی۔انسداد دہشت گردی کی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں امریکی صدر کے بیان پر عمران خان نے کہاکہ ٹرمپ کو افغانستان جنگ کا کوئی علم نہیں، اسے پاکستان کے دشمنوں نے بریف کیا، جو حقائق جانتا ہے وہ ٹرمپ کے بیان کو ماننے کو تیار نہیں۔ اس جنگ میں پاکستان کا نقصان ہوا، ہماری معیشت کو 100 ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان ہوا، 70 ہزار لوگ مارے گئے۔میں نے ہمیشہ کہا کہ یہ ہماری جنگ نہیں، اس میں نہیں جایا جائے، آج بدقسمتی ہے جو ڈالر ٹرمپ گنوا رہا ہے اسی ڈالرز نے تباہی مچاہی، اب ذلت بھی مل رہی ہے، پاکستان نے قربانیں بھی دیں، اپنا نقصان کرایا لیکن اس کے بعد پھر ہمیں ذلیل کیا جارہا ہے۔امریکی صدر میں عقل کی کمزوری ہے، وہ ہمارے دشمنوں کے ایجنڈے پر چل رہا ہے، ہمیں اب سبق سیکھنا چاہیے کہ پیسے لیکر کسی اور کی جنگ لڑیں گے تو ذلت اور تباہی ہے۔ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا اگر عدالت نے گرفتاری کا حکم دیا تو گرفتار ہوں گا۔عمران خان نے کہا کہ دونوں بھائی سعودی عرب گئے، ان کو اتنی سی بھی شرم ہو تو ڈوب جائیں، ساری قوم کے سامنے ہے کہ دونوں چوری بچانے کے لیے دوسرے ملک گئے، یہ این آر او لینے گئے لیکن اب جہاں مرضی چلے جائیں انہیں پتا ہونا چاہے کہ قوم کو پہلا این این آر او سمجھ نہیں آیا، سپریم کورٹ نے این آر او کو رد کیا، آج قوم کھڑی ہے، ان کا کوئی این آر او قبول نہیں کرے گی۔ اب یہ باہر کی قوت کو کہہ رہے کہ ہمیں بچاؤ، یہ قوم کو بھیڑ بکریاں سمجھتے ہیں، اب اگر این آر او کی خوشبو بھی آئی تو قوم سڑکوں پر نکلے گی اورشاہد خاقان کی حکومت برداشت نہیں کرسکے گی۔تحریک انصاف الیکشن کے لیے تیار ہے بلکہ جلد الیکشن چاہتی ہے، حالات سب کے سامنے ہیں، ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں، شاہد خاقان کٹھ پتلی وزیراعظم ہیں، انہوں نے اسحاق ڈر کو ملک سے باہر بھگادیا، حکومت کا کام چوروں کو بچانا رہ گیا ہے اور کوئی کام نہیں ہورہا، ڈالر اوپر جارہا ہے اور معاشی حالات خراب ہیں، قرض بڑھتے جارہے ہیں۔عمران خان نے اپنی ٹوئٹ میں بالی وڈ کی فلم ’مائی نیم از خان‘ میں شاہ رخ خان کے ڈائیلاگ کا سہارا لیا اور لکھا کہ ’میرا نام خان ہے اور میں دہشت گرد نہیں۔چیئرمین تحریک انصاف نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ نے چوروں کے بعد مجھے صادق اور امین قرار دیا۔نائن الیون کے بعد دہشت گردی کے جنگ میں ہمیں حکمران لے گئے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کا بہت نقصان ہوا۔عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کہتے ہیں انہیں اقامے پر نکالا، اقامہ ہی تو منی لانڈرنگ کا طریقہ تھا، اس لیے قبل از وقت انتخابات ضروری ہے تاکہ نیا مینڈیٹ آئے اور کام حکومت کرے۔

عمران خان

مزید : صفحہ اول