لینڈ ڈونر اور محکمہ تعلیم کا تنازعہ ، گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول صفی اللہ کلی کو تالے لگ گئے

لینڈ ڈونر اور محکمہ تعلیم کا تنازعہ ، گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول صفی اللہ کلی ...

چارسدہ(بیورو رپورٹ) لینڈ ڈونر اور محکمہ تعلیم کا تنازعہ ، گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول صفی اللہ کلی کو تالے لگ گئے ۔ محکمہ تعلیم نے سکول کھولنے کے بجائے طالبات کیلئے متبادل انتظام کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق یونین کونسل درگئی کے علاقہ صفی اللہ کلی میں سابق چوکیدار نے گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول کو تالے لگا کر بند کر دیا جسکی وجہ سے دو سو کے قریب طالبات سکول کے سامنے گلی میں کھلے آسمان تلے زمین پر بیٹھ کر تعلیم حاصل کرنے لگے۔ تاہم محکمہ تعلیم چارسدہ نے مذکورہ سکول کھلوانے کے بجائے طالبات کیلئے متبادل انتظام کیا اور تمام طالبات کو گورنمنٹ گرلز ہرائمری سکول خلے منتقل کیا گیا۔ سکول بند کروانے والے سابق چوکیدار اور لینڈ وونر ہدایت خان کا کہنا ہے کہ انہوں نے دو کنال کا پلاٹ محکمہ تعلیم کو اس شرط پر دیا تھا کہ سکول میں اسے چوکیدار بھرتی کیا جائیگا اور اسکی ریتائرمنٹ کے بعد اسکے بیٹے یا کسی رشتہ دار بھرتی ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ وہ سال 2016میں ریٹائرڈ ہو گیا ہے اور ااپنی جگہ اپنے ایک رشتہ دار کو بھرتی کروانے کیلئے درخواست دی لیکن محکمہ تعلیم چارسدہ نے مقامی ایم پی اے سلطان محمد خان کی سفارش پر علاقہ رجڑ سے تعلق رکھنے والے شخص کو بھرتی کیا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم نے میرے ساتھ وعدہ خلافی کی ہے اور جب تک میرے رشتہ دار کو بھرتی نہ کیا جاتا سکول بند رہیگا۔ اس حوالے سے محکمہ تعلیم چارسدہ کے ڈی ای او صفیہ بانو کا کہنا ہے کہ طالبات کو دوسرے سکول منتقل کیے جا چکے ہیں اور اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر چارسدہ کو رپورٹ دے دی گئی ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر