برطانیہ میں کتے کے فضلے سے سٹریٹ لائٹ جلانے کا تجربہ کامیاب

برطانیہ میں کتے کے فضلے سے سٹریٹ لائٹ جلانے کا تجربہ کامیاب
برطانیہ میں کتے کے فضلے سے سٹریٹ لائٹ جلانے کا تجربہ کامیاب

  

لندن (ویب ڈیسک) برطانیہ یورپ کا ایک ایسا ملک بن گیا ہے جہاں کتے کے فضلے سے گلیوں میں بلب (اسٹریٹ لائٹس) روشن کی جائیں گی اور اس سلسلے میں کیے جانے والے تمام تجربات کامیاب ہو چکے ہیں۔ برطانوی اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کتے کے فضلے سے اسٹریٹ لیمپ جلانے کا کامیاب تجربہ برطانوی کاﺅنٹی ووسٹرشر (Worcestershire) میں کیا گیا، اپنے پالتو کتوں کو ٹہلانے کیلئے نکلنے والے افراد مالورن ہلز میں اپنے کتوں کا فضلہ واشنگ مشین جیسے ایک ڈبے میں جمع کریں گے جو متعلقہ اسٹریٹ لائٹ کے ساتھ جڑا ہوتا ہے۔ یہ فضلہ گزرتے وقت کے ساتھ خورد بینی جر ثوموں میں تبدیل ہوجاتا ہے جس سے نہ صرف کسانوں کیلئے قدرتی کھاد بنتی ہے بلکہ اس عمل کے دوران بننے والی میتھین گیس سے سٹریٹ لائٹ جلتی ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کتے کے فضلے کی 10 تھیلیوں سے یہ مشین جیسا ڈبا (Anaerobic Digestor) دو گھنٹوں تک بلب جلانے کیلئے کافی سمجھی جانے والی میتھین گیس بناتی ہے۔ اس مشین کا خیال تین سال قبل ووسٹرشر کاﺅنٹی کے شہری برائن ہارپر کو آیا تھا۔ انہوں نے ہی یہ مشین ایجاد کرکے مالورن ہلز نامی علاقے میں نصب کی اور اسے اسٹریٹ لائٹ کے ساتھ جوڑ دیا۔ برطانوی اخبار گارجین سے بات چیت کرتے ہوئے برائن ہارپر کا کہنا تھا کہ کتوں کے فضلے سے بجلی پیدا ہوتی دیکھ کر لوگوں کی توجہ حاصل کرکے انہیں یہ بتایا جا سکتا ہے کہ یہ فضلہ بھی کام کی چیز ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کی لائٹیں لگنے سے کتوں کا فضلہ جمع کرنے میں تکلیف نہیں ہوگی۔ یاد رہے کہ جانوروں کے فضلے سے ایندھن پیدا کرنے کا خیال نیا نہیں، پتھر کے دور سے انسان فضلے کو کارآمد بنانے کے مختلف طریقوں پر عمل کر چکے ہیں۔ کینیڈا کے شہر اونٹاریو میں بھی اسی طرح کے میکنزم پر عمل کیا جا رہا ہے۔

مزید : برطانیہ