قرضے سے چھٹکارے کاوہ روحانی عمل جو غیب سے ادائیگی کے اسباب پیدا کردیتا ہے

قرضے سے چھٹکارے کاوہ روحانی عمل جو غیب سے ادائیگی کے اسباب پیدا کردیتا ہے
قرضے سے چھٹکارے کاوہ روحانی عمل جو غیب سے ادائیگی کے اسباب پیدا کردیتا ہے

  

قرض بھی ایک بیماری ہے ،لیا جائے تو پریشانی لیکر ادا نہ ہوپائے تو بیماری کے ساتھ عزت سادات بھی جاتی رہتی ہے۔سیانے لوگ کہتے ہیں کہ کوشش کرنی چاہئے قرض کے بغیر گزارہ ہوجائے۔لیکن موجودہ معاشرے میں بینکوں سے قرض کے علاوہ بھی قرضہ دینے والوں کی اتنی پرکشش ترغیبات نظر آتی ہیں کہ اسے دیکھ کر انسان بہک ہی جاتا ہے۔کوئی انسان مجبور ہوکر قرض اٹھا لیتا ہے اور پھر دیکھتا ہے کہ ادا نہیں ہوپارہا تو وہ دن میں دو عمل کرے ،صبح سویرے نماز فجر کے بعد استغفراللہ اکیالیس سو بار اکیالیس دن پڑھے اور پھر نما زعصر کے بعد جائے نماز پر بیٹھ کر اسم ربی یامتعالی گیارہ سو بار اکیالیس دن پڑھے اور دعا کرتا رہے۔انشا اللہ قرض کی ادائیگی کے اسباب پیدا ہوجائیں گے۔ 

۔ ۔

پیر ابو نعمان رضوی فی سبیل للہ روحانی رہ نمائی کرتے اور دینی علوم کی تدریس کرتے ہیں ۔ان سے اس ای میل پررابطہ کیا جاسکتا ہے۔peerabunauman@gmail.com

مزید : روشن کرنیں