جعلی بنک اکاؤنٹس کیس، 31دسمبر کی عدالتی کارروائی کا حکم نامہ جاری

جعلی بنک اکاؤنٹس کیس، 31دسمبر کی عدالتی کارروائی کا حکم نامہ جاری

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) سپریم کورٹ نے جعلی بنک اکاؤنٹس کیس کی 31دسمبر کی عدالتی کارروائی کا حکم نامہ جاری کردیا، عدالت کا 172 افراد کا نام ای سی ایل پر ڈالنے کا معاملہ دوبارہ کابینہ میں زیر غور لانے کا حکم دیدیا۔بدھ کو سپریم کورٹ کے جاری جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کے تحریری حکم نامے میں کہا گیا فاروق ایچ نائیک کو آصف زرداری اور فریال تالپور کی وکالت سے دستبردار نہیں ہونے دیں گے وہ ا پنے مو کلان کی وکالت جاری رکھیں، موکلان کا جواب اس ہفتے جمع کروائیں،فاروق ایچ نائیک اور انکے خاندان کے حوالے سے جے آئی ٹی کی آبزروشین غیر ذمہ دارانہ ہے ، جے آئی ٹی رپورٹ کا جائزہ لیتے وقت ان آبزورشین کو کالعدم قرار دینے کا جائزہ بھی لیا جائے گا ، ایف آئی اے سردار لطیف کھوسہ کیخلاف سوشل میڈیا کمپین کی تحقیقات کرے ،عدالت نے 172 افراد کے نام ای سی ایل میں ڈالنے پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا حکومت نے نمایاں سیاستدانوں ،وزیر اعلیٰ سندھ اور صوبائی وزرا کے نام بھی ای سی ایل میں ڈال دئیے۔

حکم نامہ جاری

مزید : صفحہ آخر