گوجرانوالہ، اغواء برائے تاوان کے2 ملزم گرفتار،مغوی بچے کی لاش برآمد

گوجرانوالہ، اغواء برائے تاوان کے2 ملزم گرفتار،مغوی بچے کی لاش برآمد

گوجرانوالہ(بیورورپورٹ) پولیس نے تھانہ گرجاکھ سے ایک کروڑ روپے تاوان کی خاطر اغواء کئے جانے والے14 سالہ حنظلہ نامی بچے کے قاتل گرفتار کر کے نعش برآمد کر لی ۔تفصیلات کے مطابق مسمی عرفان یوسف ولد محمد یوسف سکنہ محلہ جدید باغبانپورہ نے درخواست دی کہ اُن کا بیٹا حنظلہ اپنی دادی کو پھوپھی کے گھرچھوڑنے کیلئے گیا جو کہ اُن کے ساتھ والی گلی میں ہی رہتی ہے اور واپس نہ آیا ۔اُن کو شبہ ہے کہ نامعلوم افراد نے اُس کے بیٹے کو اغوا کر لیا ۔جس پر معاملہ سٹی پولیس آفیسر ڈاکٹر معین مسعود کے نوٹس میں لایا گیا اور انہوں نے ایس ایس پی آپریشن ثاقب سلطان و ایس ایس پی انویسٹی گیشن وقار شعیب انور کے زیر نگرانی اور ڈی ایس پی سی آئی اے عمران عباس چدھڑ کے زیر سرپرستی بچے کوبازیاب کروانے کیلئے خصوصی ٹیمیں تشکیل دیں۔ ڈی ایس پی عمران عباس چدھڑ کی زیر سرپرستی سب انسپکٹر محمد طاہر، اے ایس آئی راشد اقبال و دیگراہلکاروں نے پیشہ و رانہ مہارت استعمال کرتے ہوئے قاسم ولد عبدالرحمن اور فیصل ولد ایوب ا قوام گجر ساکنائے محلہ رسول پورہ جدیدباغبانپورہ کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کی ۔جنہوں نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ مقتول حنظلہ کو دھوکہ دہی سے اپنی موٹر سائیکل پر بٹھاکرعلاقہ تھانہ نوشہرہ ورکاں کے گاوٗں بگے میں لے گئے ۔جہاں مغوی کو گلا دبا کر مارکر نعش جھاڑیوں میں چھپا دی اور مغوی کے ورثاء سے بذریعہ فون ایک کروڑروپے تاوان کا مطالبہ کرتے رہے۔سی آئی پولیس نے ملزمان کی نشاندہی پر مغوی حنظلہ کی نعش برآمدکرلی۔ اس موقع پر سی پی او گوجرانوالہ ڈاکٹر معین مسعود نے کہا کہ لوگوں کی جان ومال اور عزت کا تحفظ اولین ترجیح ہے لہٰذااغواء برائے تاوان اور دیگر سنگین جرائم میں ملوث مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔ اہل خانہ اور معززین علاقہ نے پولیس کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے سی پی او کا شکریہ ادا کیا ۔

اغواء کارگرفتار/ لاش برآمد

مزید : صفحہ آخر