جعلی ڈگریاں،پی آئی اے نے 10فضائی میزبان فارغ کر دئیے ،21 کے لائسنس معطل

جعلی ڈگریاں،پی آئی اے نے 10فضائی میزبان فارغ کر دئیے ،21 کے لائسنس معطل

کراچی،اسلام آباد (آ ئی این پی،مانیٹرنگ ڈیسک)پی آئی اے انتظامیہ نے منی لانڈرنگ اور اسمگلنگ میں ملوث کیبن کریو کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے، دوسری جانب سول ایوی ایشن نے21کپتانوں کے لائسنس بھی معطل کردیے،تفصیلات کے مطابق بد ھ کو قومی ایئر لائن کے جنرل مینیجر فلائٹ سروسز کی جانب سے ایک ہدایات نامہ جاری کیا گیا ہے جس میں منی لانڈرنگ اور ممنوعہ اشیا کی اسمگلنگ میں ملوث عملے کے خلاف سخت کارروائی کا حکم دیا گیا ہے۔ہدایت نامے کے متن کے مطابق منی لانڈرنگ ،اسمگلنگ، اور ممنوعہ سامان لے جانیوالوں میں ملوث کیبن کریو کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ جی ایم فلائیٹ سروسز نے حکم دیا ہے کہ تمام کیبن کریو ملکی اور غیر ملکی کسٹم اور امیگریشن قوانین پر عمل درآمد کیا جائے۔یہ بھی کہا گیا ہے کہ قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے تمام ملازمین کو کسی بھی قسم کی رعایت نہیں دی جائے گی۔کوئی بھی فضائی میزبان غیر قانونی موبائل، لیپ ٹاپ، سگریٹ اورمنی لانڈرنگ میں ملوث پایا گیاتو ملازمت سے فارغ کردیا جائے گا۔دوسری جانب سول ایوی ایشن اتھارٹی نے تعلیمی اسناد جمع نہ کرانے والے پی آئی اے کے 21 پائلٹس کو اڑان بھرنے سے روک دیا ہے ۔ مذکورہ پائلٹس نے میٹرک اور و انٹرمیڈیٹ کی تعلیمی اسناد سول ایوی ایشن اتھارٹی کو فراہم نہیں کی تھیں۔مذکورہ بالا پائلٹس کے لائسنس بھی معطل کیے گئے اور فلائٹ شیڈول سے ان کے نام نکالتے ہوئے انہیں ڈیوٹیاں کرنے اور جہاز اڑانے سے مکمل طور پر روک دیا گیا ہے۔ پی آئی اے انتظامیہ کی جعلی ڈگریوں کے حامل کیبن کریو کیخلاف کارروائی جاری ہے۔ پی آئی اے میں دس فضائی میزبانوں کو جعلی ڈگریوں کی بنیاد پر ملازمت سے فارغ کر دیا گیا۔پی آئی اے نے جعلی ڈگریوں کے معاملے پر سپریم کورٹ کی ہدایت پر جعلی ڈگری کے حامل کیبن کریو کیخلاف کارروائی تیز کر دی۔ پی آئی اے میں دس فضائی میزبانوں کو جعلی ڈگریوں کی بنیاد پر ملازمت سے فارغ کر دیا گیا۔ فارغ ہونے والوں میں 2 فلائٹ اسٹیورڈ اور ایک سینئر ایئر ہوسٹس بھی شامل ہے۔ ذرائع کے مطابق ملازمت سے فارغ ہونے والوں کی تعداد 60 سے زائد ہو چکی ہے۔ اس سے قبل بھی پی آئی اے دسمبر کے مہینے میں پچاس سے زائد فضائی میزبانوں کو جعلی ڈگری پر ملازمت سے فارغ کر چکی ہے۔

فارغ

مزید : صفحہ آخر