شاہد خاقان ،سابق سیکرٹری پٹرولیم ،ایم ڈی پی ایس او ،سی او اوپنجاب بینک کیخلاف تحقیقات کی منظوری

شاہد خاقان ،سابق سیکرٹری پٹرولیم ،ایم ڈی پی ایس او ،سی او اوپنجاب بینک ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ،آئی این پی ) قومی احتساب بیورو (نیب ) نے سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ،سابق سیکرٹری پٹرولیم ارشد مرزا، سابق ایم ڈی پی ایس او شیخ عمران الحق، ڈپٹی ایم ڈی پی ایس او یعقوب ستار اور بینک آف پنجاب کے سی ای او نعیم الدین خان کے خلاف بھی انویسٹی گیشنز کی منظوری دیدی ،چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب کا ایمان کرپشن فری پاکستان ہے، ملک سے بدعنوانی کے خاتمے کی پالیسی پر سختی سے عمل پیرا ہے، نیب بدعنوانی کے خاتمہ کو اپنی قومی ذمہ داری سمجھتا ہے، میگاکرپشن کے مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں، ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ، اشتہاری اور مفرور ملزمان کی گرفتاری اور ان کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنا اولین ترجیح ہے، بدعنوان عناصر کے خلاف شکایات کی جانچ پڑتال ، انکوائریوں اور انوسٹی گیشنز کو قانون، میرٹ، شفافیت اور ٹھوس شوائد کی بنیا د پر مقررہ وقت کے اندر منطقی انجام تک پہنچایا جائے۔ بدھ کو قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس قومی احتساب بیورو کے چئیرمین جنا ب جسٹس جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈکوارٹر ز اسلام آبادمیں منعقد ہوا ۔ نیب اس بات کو واضح کرنا چاہتا ہے کہ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈکے اجلاس کے باے میں تفصیلات عوام کو فراہم کی جائیں جو طریقہ گزشتہ کئی سالوں سے رائج ہے جس کا مقصد کسی کی دلآزاری مقصود نہیں۔ تمام انکوائریاں اورانویسٹی گیشنز مبینہ الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں جوکہ حتمی نہیں۔ نیب قانو ن کے مطابق تمام متعلقہ افراد سے بھی ان کا موقف معلوم کرے گا جس کے بعد مزیدکارروائی کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کیا جاتاہے ۔ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں 2 انو یسٹی گیشنزکی منظوری دی گئی جن میں شاہد خاقان عباسی سابق وفاقی وزیر برائے پٹرولیم وقدرتی وسائل، ارشد مرزا ،سا بق سیکرٹری پٹرولیم ،شیخ عمران الحق، سابق منیجنگ ڈائریکٹرپاکستان اسٹیٹ آئل(PSO)،یعقوب ستا رڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹرپاکستان اسٹیٹ آئل اورمحمدنعیم الدین خان صدر/چیف آپریٹنگ آفیسر بنک آف پنجاب اور دیگر شامل ہیں ۔ جبکہ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں20 انکوائریوں کی منظوری دی گئی۔ جن میں میاں امتیا زسابق ممبر قومی اسمبلی ،میاں ابراہیم ،میاں اعجاز عامر ،چوہدری محمد منیر اور دیگر، سہیل انورسیال، سابق صوبائی وزیر داخلہ،علی انورسیال اوردیگر، جام خان شورو،سابق صوبائی وزیر محکمہ بلدیات سندھ ،زاہد علی برگری، سابق صوبائی وزیر سندھ،عبدالجبارخان سابق پولیٹیکل کنسلٹنٹ،امان اللہ سیال چئیرمین مہران کوآپریٹو سوسائٹی، علی عثمان سٹاک بروکریج پرائیویٹ لیمیٹیڈ،خالدہ انور،ایم عثمان تصدق اوردیگر،جسٹس (ر)ملک محمدقیوم سابق اٹارنی جنرل پاکستان اور دیگر،فاروق اعوان سابق سیکرٹری وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور دیگر، میسرز گولڈ ٹرانسمٹ نیٹ ورک ٹیکنالوجی پرائیویٹ لمیٹڈ کراچی اور میسرز گرین ایپل سپر مارکیٹ پرائیویٹ لمیٹڈ لاہور، شاہد ملک،شہباز یاسین ملک ،صائمہ شہباز ملک مالکان ہلٹن فارما لیمیٹید اور دیگر،میسرز ڈی بلوچ ،ٹھیکہ دار،محکمہ آبپاشی صوبہ سندھ کے افسران /اہلکاران اور دیگر، محمد رمضان اعوان ،سابق سیکر ٹری ،لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ سندھ اور دیگر، محمد طارق اعوان سابق سیکرٹری ورکرز ویلفیئر بورڈ خیبر پختونخوا،فریداللہ سیکرٹری ورکرز ویلفیئر بورڈ خیبر پختونخوا، افسران و اہلکاران ورکرز ویلفیئر بورڈ خیبر پختونخوا ، لیاقت علی بھٹی ایس ڈی ای او محکمہ تعلیم ، دیدار حسین جلبانی،سابق ڈی ای او محکمہ تعلیم قمبرشہداد کوٹ،قمر رضا بلوچ ،سابق ڈپٹی کمشنر قمبرشہداد کوٹ اور دیگر، افسران / اہلکاران نیشنل ہائی وے اتھارٹی اولڈ لاڑکانہ پیکج ا وردیگر،عبدالرزاق، ایکسئین ،سید قلندر حسین شاہ چئیرمین ڈسٹرکٹ کونسل بہاول نگر، ڈسٹرکٹ کونسل بہاول نگر کے افسران / اہلکاران اوردیگر ، ایسٹ ویسٹ کمپنی ایل ایل سی کی انتظامیہ اور دیگر ، پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کارپو ریشن لمیٹڈ کراچی کی انتظامیہ ،عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے افسران / اہلکاران اور دیگرکے خلاف انکوائریاں شامل ہیں۔ ایگزیکٹو بورڈ نے پی آئی اے کے افسران /اہلکاران کے خلاف بھرتیوں کا معاملہ قانون کے مطابق تحقیقات کیلئے ایف آئی اے، پرنسپل گرلز کیڈٹ کالج مردان کی تعیناتی کا معاملہ قانون کے مطابق تحقیقات کیلئے چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا کوبھیجنے کی منظوری دی۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے منشاء گروپ کے خلاف شکایت کی جانچ پڑتال کی منظوری دی جبکہ علی عثمان سٹاک بروکریج پرائیویٹ لیمیٹیڈ،خالدہ انور،ایم عثمان تصدق اوردیگر کی رضاکارانہ واپسی کی درخواست مسترد کر دی۔

نیب

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی )نیب نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی فلیگ شپ ریفرنس میں بریت اور العزیزیہ ریفرنس میں سزا میں اضافے کیلئے اپیل دائر کر دی۔ تفصیلات کے مطابق نیب کی جانب سے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دو اپیلیں دائر کی گئیں، ایک اپیل کا تعلق احتساب عدالت کی جانب سے فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کی بریت اور دوسری العزیزیہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم کی سزا میں اضافے کیلئے ہے ۔نیب نے احتساب عدالت کے فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے درخواست میں موقف اختیار کیا کہ فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کی کرپشن کے ٹھوس ثبوت پیش کیے اس لیے انہیں بری کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔ نیب نے موقف اختیار کیا کہ محض شک کا فائدہ دے کر نواز شریف کو بری کرنا خلاف قانون ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ نواز شریف کے خلاف شواہد پر سزا سنائے۔نیب نے اپنی دوسری اپیل میں مقف اختیار کیا کہ العزیزیہ ریفرنس میں نواز شریف کے خلاف مقدمہ ثابت کیا، احتساب عدالت سے نواز شریف کو ملنے والی 7 سال قید کی سزا کم ہے، اسے بڑھایا جائے۔نیب کا موقف ہے کہ نواز شریف پر جرم ثابت ہوچکا ہے اس لیے نیب آرڈیننس میں دفعہ 9 اے 5 میں زیادہ سے زیادہ سزا 14 سال قید ہے۔عدالتی عملے نے دونوں درخواستیں وقت ختم ہونے کے باعث واپس کر دیں، عدالتی عملے کے مطابق درخواست دائر کرنے کا وقت دن ایک بجے تک ہے، عدالتی وقت ختم ہونے پرنیب کی دونوں اپیلیں واپس لوٹا دی تھیں تاہم رجسٹرار آفس نے درخواستیں وصول کر لیں۔

نیب کی اپیل

مزید : صفحہ اول