واسا کا پانی چوری روکنے اور واجبات کی وصولی کیلئے ’’ واٹر پولیس فورس‘‘ بنانے کا فیصلہ

واسا کا پانی چوری روکنے اور واجبات کی وصولی کیلئے ’’ واٹر پولیس فورس‘‘ ...

لاہور (جاوید اقبال)واسا نے واٹر پولیس فورس بنانے کا فیصلہ کر لیا،حکام نے سمری تیار کرلی جوبورڈ آف گورنر کے آئندہ اجلاس میں پیش کی جائے گی جبکہ پانی چوروں کے ٹرائل کیلئے ایکسینز اور ڈائریکٹرز سمیت گریڈ 18 کے افسروں کو دفعہ 30 کے مجسٹریٹ کے اختیارات تفویض کر دئیے ۔تفصیلات کے مطابق واسا حکام کی جانب سے بنائی جانے والی متوقع واٹر پولیس فورس کے عہدے کانسٹیبل سے لے کر ڈی ایس پی تک ہوں گے اور وہ کسٹم اور ایکسائز پولیس کو حاصل اختیارات کی طرز پر کام کرے گی۔ذرائع کے مطابق واٹر پولیس فورس پانی چوری اور ضائع کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے گی بلکہ واسا کے واجبات کی وصولی بھی واٹر پولیس فورس کے سپرد کردی جائے گی۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ واسا کی تاریخ میں پہلی مرتبہ تمام ایکسینز ڈائریکٹرز اور ڈپٹی ڈائریکٹر کو دفعہ30 کے مجسٹریٹ کے اختیارات بھی دے دئیے گئے ۔ اس حوالے سے ایم ڈی واسا زاہد عزیز سید سے بات کی گئی تو انہوں نے بتایا کہ واٹر پولیس فورس قائم کرنے کا مقصد واسا میں انفورسمنٹ کا اپنا نظام لانا ہے۔ انھوں نے کہا کہ کسٹم ایکسائز جیسے محکموں کے پاس بھی اپنی پولیس فورس ہے اس لئے ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ واسا کے پاس بھی اپنی پولیس ہونی چاہئے جس کیلئے ایل ڈی اے کے بورڈ آف گورنرز سے جلد منظوری حاصل کی جا ئے گی۔انہوں نے کہا کہ واسا حکومت سے ہرسال سوا 2 ارب روپے کی سبسڈی بھی لینابند کر دے گا۔ ایم ڈی واسا نے مزید کہا کہ امید ہے مارچ سے اس منصوبے پر عمل درآمد شروع ہوجائے گا۔

واٹر پولیس فورس

مزید : صفحہ اول