ایف بی آر اور محکمہ کسٹم تاجروں کو ہراساں کرنا بند کریں، میاں طارق فیروز

ایف بی آر اور محکمہ کسٹم تاجروں کو ہراساں کرنا بند کریں، میاں طارق فیروز

لاہور(نیوز رپورٹر) انجمن تاجران لاہور کے صدرطارق فیروز و جوائنٹ سیکرٹری میاں سلیم نے کہا ہے کہ ایف بی آر اورمحکمہ کسٹم تاجر براری کو حراساں کرنا بند کرے ۔ کروڑوں روپے ٹیکس ادا کرنے والے کاروباری افراد کی دکانوں اور گوداموں پر چھاپے مارنا درست اقدام نہیں اس سے تاجربرادری شدید خوف ہراس اور پریشانی سے دوچار ہے ، ہم سمگلنگ کی شدید مذمت کرتے ہیں تاہم سمگلنگ شدہ مال کو بارڈرز اور مارکیٹ تک پہنچنے تک 40 جگہ چیک پوسٹوں اور شہروں کے مداخل پر روکا جائے ،مارکیٹ کی دکانوں تک آنے والے سامان کے لاکھوں روپے تاجر حضرات ادا کر چکے ہوتے ہیں۔

تو کسٹم اور ایف بی آر ڈیپارٹمنٹ کے اہلکارچھاپے مارنا شروع کر دیتے ہیں ،جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ سرکاری اداروں کے اہلکاروں اور سمگلنگ مافیا کے مابین گٹھ جوڑ ہے ۔ کیونکہ سمگلنگ کے مال کا بارڈرز اور تمام چیک پوسٹوں سمیت شہر کے مداخل سے باآسانی گزر کر مارکیٹوں تک پہنچ جانا اس بات کی واضح دلیل ہے یہ بات انہوں نے گزشتہ روز اپنے ایک بیان میں کہی۔ میاں سلیم نے کہا کہ انجمن تاجران لاہور کے ذ مہ داران سمگلنگ مافیا کی شدید مذمت کرتی ہے تاہم عام دکانداروں اور تاجر حضرات کو ایف بی آر اور کسٹم ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے مارکیٹوں میں چھاپے مارنے سے شدید خوف ہراس کا سامنا ہے ۔انہوں نے کہاکہ سرکاری محکمے کے اہلکار اپنی نا اہلی اور کرپشن کو چھپانے اور کارکردگی دکھانے کیلئے مارکیٹوں میں چھاپے مارنا شروع کر دیتے ہیں ،جو کسی صورت درست اقدام نہیں ہے اگر مذکورہ محکموں کو اپنی کارکردگی دکھانے کا اتنا ہی شوق ہے تو پھر سمگلنگ کا مال بارڈرز اور شہر کے مداخل پر پکڑیں تاکہ عام دکانداروں اور تاجروں کو نقصان س سے بچایا جا سکے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مذکورہ محکموں کا قبلہ درست کرنے کیلئے انکی شہروں کے باہر کارکردگی کو مانیٹر کیا جائے کہ بارڈرز اور شہروں کے مداخل پر کتنا سمگلنگ کا مال پڑ رہے ہیں اور بلا جواز کاروباری افراد کو پریشان اور حراساں کرنے سے روکا جائے ۔

مزید : کامرس