دباؤ سے پاک ، ہم آہنگی پر مشتمل ماحول کا پیداوار ی عمل بڑھانے میں اہم کردار : ماہرین

دباؤ سے پاک ، ہم آہنگی پر مشتمل ماحول کا پیداوار ی عمل بڑھانے میں اہم کردار : ...

لاہور (نیوز رپورٹر) دباؤ سے پاک اور ہم آہنگی پر مشتمل ماحول نہ صرف آجر اور اجیر کے باہمی تعلقات کو مزید مستحکم کرتا ہے بلکہ اس سے پیداواری عمل بھی کئی گنا بڑھ جاتا ہے جس سے صنعت و تجارت اور معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں "کام کے دوران دباؤ کیسے کم کیا جائے" کے موضوع پر منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مختلف ماہرین نے کیا۔ لاہور چیمبر کے قائم مقام صدر خواجہ شہزاد ناصر، نائب صدر فہیم الرحمن سہگل، ٹرینر تنزیلہ خان، سابق صدور شاہد حسن شیخ، ظفر اقبال چودھری، انجینئر سہیل لاشاری اور ایگزیکٹو کمیٹی اراکین نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ تنزیلہ خان نے کہا کہ دباؤ کم کرکے تاجر نہ صرف اپنی قیمتی وقت اور توانائی بلکہ سرمایہ بھی بچاسکتے ہیں۔ دباؤ براہِ راست کسی شخص کی کارکردگی پر اثر انداز ہوتا ہے جس سے وہ صنعتی یونٹ بھی متاثر ہوتا ہے جہاں وہ شخص کام کررہا ہو لہذا دباؤ کم کرنے کے طریقہ کار اعلیٰ انتظامی افسران کی تربیت کا لازمی حصہ ہونے چاہئیں۔ انہوں نے کہا یہ ایک عام تجربہ ہے کہ کام کرنے کی جگہ پر دباؤ کی وجہ سے ورکر یا افسران کی کارکردگی بُری طرح متاثر ہوئی جبکہ دباؤ سے پاک ماحول میں ورکرز نے اپنی صلاحیتوں سے بھی بڑھ کر کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ دباؤ کم کرنے کی حکمت عملی نہ صرف دباؤ کے منفی اثرات کو کم کرتی ہے بلکہ پیداوار میں اضافہ اور ورکرز کی کارکردگی کو بھی بہتر کرتی ہے۔ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے قائم مقام صدر خواجہ شہزاد ناصر اور نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ پاکستان آج ایک مشکل دوراہے پر ہے اور اسے بہت سے اقتصادی، سماجی و سیاسی چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کے لیے ہم آہنگی کو فروغ دینا اور دباؤ سے پاک ماحول پیدا کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تاجروں، ملازمین اور معاشرے کے لیے پُرسکون ماحول پیدا کرکے قوم کی اجتماعی کارکردگی کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔ سیمینار کے انعقاد کا مقصد یہ بتانا ہے کہ کام کرتے ہوئے ذہنی اور جسمانی دباؤ کیسے کم کرکے اپنے متعلقہ شعبوں میں کارکردگی بہتر بنائی جاسکتی ہے۔

مزید : کامرس