افغانستان سے امریکی فوجیوں کے انخلا پر پڑوسی ممالک کو تشویش

افغانستان سے امریکی فوجیوں کے انخلا پر پڑوسی ممالک کو تشویش

کابل(این این آئی) امریکا کے افغانستان سے ہزاروں فوجیوں کے انخلا کے منصوبے پر افغانستان کے پڑوسی ممالک کے سفیروں نے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی فوج کی واپسی سے لاکھوں افغانی ان کے ممالک کی سرحد پار کرسکتے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکی حکام (بقیہ نمبر44صفحہ7پر )

سے اس حوالے سے بات چیت کرنے والے پڑوسی ممالک کے سفیروں کا کہنا تھا کہ وہ اپنی سرحد کے حوالے سے پالیسیز پر نظر ثانی کر رہے ہیں اور سرحد کے لیے تیاریاں بھی کریں گے۔کابل میں سینئر ایشیائی سفیر کا کہنا تھا کہ فی الوقت ہم فوجی انخلا کے حوالے سے کچھ بھی وضاحت نہیں کرسکتے تاہم صورتحال فوری طور پر بد سے بدتر کی جانب جاسکتی ہے۔حکام نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ سرحد کے قریب کیمپس بنائے جائیں گے جو نئے آنے والے افغان پناہ گزیوں اور غیر قانونی مہاجرین کے لیے ہوں گے، افغانیوں کو پاکستان میں غیر قانونی گھر بنانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے پناہی گزین کے مطابق افغانستان جس کی سرحد پاکستان، ایران، ترکمنستان، ازبکستان، تاجکستان اور چین سے ملتی ہے، دنیا کا دوسرا بڑا ملک جہاں سے بڑی تعداد میں لوگ دوسرے ممالک میں پناہ لیتے ہیں۔عالمی ادارہ برائے مہاجرین کے مطابق تقریباً 14 لاکھ افغان پاکستان میں قیام پذیر ہیں اور تقریباً 12 لاکھ ایران میں ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر