ناسا کے خلائی جہاز کا زمین سے رابطہ،کامیاب سفرکی تصدیق کردی

ناسا کے خلائی جہاز کا زمین سے رابطہ،کامیاب سفرکی تصدیق کردی

میڈرڈ (این این آئی)امریکی خلائی ایجنسی ناسا کے خلائی جہاز نیو ہورائزن نے پلوٹو کے نزدیک سیارچے الٹیما ٹولی سے زمین کے ساتھ رابطہ کر کے اپنے کامیاب سفر کی تصدیق کر (بقیہ نمبر29صفحہ7پر )

دی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یہ سیارہ زمین سے ساڑھے چھ ارب کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے اور اگر نئے افق اس کے پاس سے گزرا تو یہ نظامِ شمسی کا سب سے دور سیارہ یا سیارچہ ہو گا جس تک انسان کا بنایا ہوا کوئی خلائی جہاز پہنچنے میں کامیاب ہو گا۔یہ فاصلہ اتنا دور ہے کہ وہاں سے زمین تک سگنل پہنچنے میں چھ گھنٹے آٹھ منٹ کا وقت لگا۔ واضح رہے کہ الٹیما ٹولی پلوٹو سے بھی مزید ڈیڑھ ارب کلو میٹر دور واقع ہے۔نیو ہورائزن نے الٹیما کے مدار کے دوران اپنے کمپیوٹر میں سائنسی ڈیٹا اور تصاویر اکھٹی کی ہیں، جنھیں اب وہ آنے والے مہینوں میں یہاں بھیجے گا۔اس خلائی جہاز سے موصول ہونے والا ریڈیو پیغام سپین کے شہر میڈرڈ میں نصب ناسا کے ایک بڑے اینٹینا نے وصول کیا۔اس ابتدائی سگنل سے زمین پر موجود نگرانی کرنے والے سائنسدانوں کو اندازہ ہوگا کہ 'نیو ہورائزن' کی کارکردگی کیسی رہی اور اس نے سیارچے سے صرف 3500 کلومیٹر دور رہ کر کیسا کام کیا۔مشاہدات مکمل کرنے کے بعد جہاز زمین پر لوٹ آئے گا اور اس کی میموری میں موجود تمام ڈیٹا ڈاؤن لوڈ کیا جائے گا۔امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سائنس دان اس لمحے پر انتہائی خوشی اور جوش کا اظہار کیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر