سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان دسمبر 2018 میں 1130 نئی کمپنیوں کی رجسٹریشن

سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان دسمبر 2018 میں 1130 نئی کمپنیوں کی ...

ملتان (نیوز رپورٹر)سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان میں دسمبر 2018ء میں ملتان سمیت ملک بھر میں 1,130 نئی کمپنیاں رجسٹرڈ ہوئیں۔ رجسٹریشن کی یہ تعداد گزشتہ برس کی اسی مدت(بقیہ نمبر28صفحہ12پر )

کے مقابلے میں 33 فیصد زائد ہے۔ اس نئی رجسٹریشن کے ساتھ ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ کمپنیوں کی کل تعداد 94,205 ہو گئی ہے۔ ایس ای سی پی کی جانب سے رجسٹریشن کے عمل کو آسان بنانے، سہولت ڈیسک کے اجراء اور رجسٹریشن کی فیسوں میں کمی اور سرمایہ کاروں کو فراہم کی گئیں، دیگر اصلاحات رجسٹریشن کے رجحان میں اضافے کا باعث بنیں۔دسمبر کے دوران رجسٹریشن حاصل کرنے والی کمپنیوں میں 74 فیصد کمپنیاں بطور پرائیوٹ لمیٹڈ رجسٹر ہوئیں جبکہ 24 فیصد سنگل ممبر کمپنیز جبکہ 2 فیصد غیر منافع بخش، غیر ملکی کمپنیاں اور لمیٹڈ لائیبیلٹی پارٹنرشپ کے طور پر رجسٹر ہوئیں سب سے زیادہ ٹریڈنگ کے شعبہ میں کمپنیز رجسٹر ہوئیں جن کی تعداد 201 رہی۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی میں 138، خدمات کے شعبہ میں 136، تعمیرات کے شعبہ میں 116 کمپنیاں رجسٹر ہوئیں، سیاحت میں 67،تعلیم کے شعبہ میں 37، خوراک و مشروبات میں 35، رئیل سٹیٹ میں 33، انجنیئرنگ، مارکیٹنگ اور اشتہارات، ہر ایک میں 32 کمپنیوں نے رجسٹریشن حاصل کی۔کارپوریٹ ایگری کلچر فارمنگ میں 27، فارماسوٹیکل میں 24، ٹرانسپورٹ میں 23، ٹیکسٹائل میں 21، ایندھن اور توانائی، کیمیکل، صحت، کان کنی ہر ایک شعبہ میں 16 کمپنیاں رجسٹر ہوئیں۔ کاغذ اور بورڈ میں 15، مواصلات میں 14، آٹو اینڈ الائیڈ میں 12 اور 103 کمپنیاں دیگر شعبوں میں رجسٹر ہوئیں۔ دسمبر میں 57 نئی کمپنیوں میں غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی۔ یہ سرمایہ کاری کینیڈا، چین، یونان، ہنگری، جاپان، کینیا، ہالینڈ، نیوزی لینڈ، ناروے، فلپائن، سعودیہ عرب، سری لنکا، سویڈن، سویٹزرلینڈ، تھائی لینڈ، تنزانیہ، ویت نام برطانیہ اور امریکہ سے ہوئی۔404 کمپنیاں اسلام آباد میں رجسٹر ہوئیں جبکہ لاہور میں تین سو ایک اورکراچی سے 205 کمپنیوں نے رجسٹریشن حاصل کی جبکہ پشاور میں 88، گلگت بلتستان میں 53، ملتان میں 47، ملتان میں 21، فیصل آباد میں 9، کوئٹہ اور سکھر میں 2، 2 کمپنیاں رجسٹرڈ ہوئیں۔

رجسٹریشن

مزید : ملتان صفحہ آخر