ادویات سے بنی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے اور لکھنے پر پابندی کے قانون پر عمل درآمدشروع،کئی ہزار ممنوعہ ڈرنکس تلف

ادویات سے بنی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے اور لکھنے پر پابندی کے قانون پر عمل ...
ادویات سے بنی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے اور لکھنے پر پابندی کے قانون پر عمل درآمدشروع،کئی ہزار ممنوعہ ڈرنکس تلف

  

گوجرانوالہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب فوڈ اتھارٹی نے  ادویات سے بنی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے اور لکھنے پر پابندی کے قانون پر عمل درآمد کا سخت آغازکرتے ہوئے  105مقامات کی چیکنگ کے دوران 12 ہزار ایک سو 74 بوتلوں میں موجود 3,251لیٹرز ممنوعہ ڈرنکس تلف کر دیں،یاد رہے کہ پنجاب فود اتھارٹی کی جانب سے دیا گیا آٹھ ماہ کا بزنس ایڈجسٹمنٹ ٹائم 31 دسمبر 2018 کو ختم ہو گیا تھا، دوسری طرف فوڈ سیفٹی ٹیموں نے ناقص اشیاء کی فروخت اور جرمانوں کی عدم ادائیگی پر2فوڈ پوائنٹس سر بمہر جبکہ متعدد فوڈ پوائنٹس کو 65,800کے جرمانے عائد کیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ بھر میں ادویات سے بنی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے اور لکھنے پر پابندی کے قانون پر عمل درآمد کا سخت آغازکر دیا گیا ہے۔گوجرانوالہ ڈویژن بھر میں105مقامات کی چیکنگ کے دوران 12,174کین اور بو تلوں میں موجود3,251لیٹرز ممنوعہ ڈرنکس تلف کر دیں۔ ڈرنک کارنرز پر بوتلوں میں 200 پی پی ایم کی بجائے 450 پی پی ایم کیفین لیول پر فروخت کی جا رہی تھیں۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے قانون کے مطابق ادویاتی ڈرنکس میں زیادہ سے زیادہ 200 پی پی ایم  کیفین کا استعمال انسانی صحت کیلئے خطرناک نہیں ہے ۔ یاد رہے اپریل 2018 میں ادویاتی اجزاء والی ڈرنکس کو انرجی ڈرنکس کہنے پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی، آٹھ ماہ کا بزنس ایڈجسٹمنٹ ٹائم 31 دسمبر 2018 کو ختم ہو گیا تھا۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کے مطابق پراڈکٹ پر لفظ انرجی نہ لکھنے اور لیبل پر واضح طور پر’’ ہائیلی کیفینیٹڈ ڈرنک‘‘ تحریر نہ کرنے پر بھی کاروائیاں کی گئیں۔علاوہ ازیں سیالکوٹ میں چیکنگ کے دوران سابقہ دی گئی ہدایات پر عمل نہ کرنے،جرمانوں کی عدم ادائیگی پر عبدالملک نان شاپ اورالکرم سویٹس کو سر بمہر کیا گیا۔کیپٹن (ر) محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ انرجی ڈرنکس میں کیفین کی زیادہ مقدار بلڈپریشر، امراض قلب سمیت متعدد موذی امراض کا باعث بنتی ہے،صوبہ بھر میں چیکنگ کے دوران زیادہ تر مقامات پر ممنوعہ ڈرنکس کا نہ پایا جانا مثبت پیش رفت ہے،عوام کو صحت مند خوراک کی فراہمی کے ساتھ ساتھ درست معلومات فراہم کرنا بھی ہماری ذمہ داری ہے،نقصان دہ اجزاء والی اشیاء دھوکہ دہی سے فروخت کر نے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /گوجرانوالہ