متعلقہ بینکوں نے ایف آئی اے سے تعاون نہیں کیا ،سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس میں عبوری حکم نامہ جار ی کردیا

متعلقہ بینکوں نے ایف آئی اے سے تعاون نہیں کیا ،سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس میں ...
متعلقہ بینکوں نے ایف آئی اے سے تعاون نہیں کیا ،سپریم کورٹ نے اصغر خان کیس میں عبوری حکم نامہ جار ی کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ آف پاکستان نے اصغر خان کیس کا 3 صفحات پر مشتمل عبوری حکم نامہ جاری کردیا ہے جس کے مطابق حقیقت سے واقف افراد کو رسیدوں اور رقم کی ادائیگیوں کے طریقہ کار کا نہیں پتہ نہیں،متعلقہ بینکوں نے بھی ایف آئی اے سے تعاون نہیں کیا،معاملہ اس نہج پر پہنچ چکا ہے کہ اسے بند کردیا جائے۔

جیونیوز کے مطابق عدالت نے ایئر مارشل (ر) اصغر خان کے قانونی ورثا کو نوٹس جاری کئے ہیں جب کہ عدالتی حکم میں کہا ہے کہ سیاست دانوں کو پیسے دیے یا نہیں، یہ پتہ لگانے کیلئے ایف آئی اے نے متعدد کارروائیاں کیںاورحتمی رپورٹ میں لکھا ہے کہ اہم گواہان کے بیانات میں خلا موجودہے اور گواہان کے بیانات آپس میں بھی نہیں ملتے ۔

سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں مزید کہا کہ حقیقت سے واقف افراد کو رسیدوں اور رقم کی ادائیگیوں کے طریقہ کار کا نہیں پتہ ، اصلی رقم جو بینک اکاﺅنٹس میں ٹراسفر کی گئی واضح نہیں، متعلقہ بینکوں کی جانب سے بھی ایف آئی اے سے تعاون نہیں کیا۔ متعلقہ بینکوں سے گزشتہ 24 سال کا ریکارڈ نہیں دیا گیا اور مدعا علیہ کی جانب سے کوئی قانونی ثبوت نہیں پیش کیا گیا، حکم نامے میں کہا گیاہے کہ یہ کیس اصغر خان کی جانب سے شروع کیا گیا تھا جو کہ اب دنیا میں نہیں ہیں ، عدالت نے کیس کی مزید سماعت ایک ہفتے کیلئے ملتوی کردی ۔

مزید : قومی /جرم و انصاف /اہم خبریں