قومی سلامتی امور کو سیاست کی نظر نہیں کرنا چاہئے: فردوس عاشق

قومی سلامتی امور کو سیاست کی نظر نہیں کرنا چاہئے: فردوس عاشق

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ قومی سلامتی، استحکام، وقار اور تشخص کا تحفظ اولین ترجیح اور ذمہ داری ہے، قومی سلامتی کے امور کو سیاست کی نظر نہیں کرنا چاہیے اور اس روایت کا خاتمہ ہونا چاہیے،امید ہے پارلیمنٹ موجودہ بحث کو ہمیشہ کیلئے حل کرنے میں قانونی و آئینی کردار ادا کریگی،،2020 امید، ریلیف اور پسے ہوئی طبقے کی ترقی کاسال ہے، حکومت پسے ہوئے طبقے کو ان کا حق لوٹائے گی، دوست ممالک پاکستان کو مستحکم کرنے میں کردار ادا کر رہے ہیں۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کے اداروں کی ذمہ داری ہم سب پر عائد ہوتی ہے جو قوم کی فلاح کے ضامن ہیں۔فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ پارلیمنٹ میں ایسا معاملہ لایا گیا ہے جو وزیر اعظم کے دائرہ اختیار میں آتا ہے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ قومی سلامتی کے اداروں کے حوالے سے ہم سب کا کردار ذمہ دارانہ ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنے ایگزیکٹو اختیارات ہونے کے باوجوداہم قومی امور کے حل کیلئے پارلیمنٹ سے رجوع کیا ہے، اپوزیشن کی تمام جماعتیں بھی قومی سلامتی اور قومی مفادات کی بھی اتنی ہی ضامن ہیں جتنی حکومت ضامن ہے۔انہوں نے کہا کہ قومی شناخت کے امور کو سیاست سے پاک ہونا چاہیے اور ان کو سیاست زدہ کرنے کی روایت ختم ہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ قومی اور عسکری قیادت مل کر نئی سوچ کے ساتھ ملک کومعاشی، سمیت ہر محاذ پر مضبوط اور مستحکم کر رہی ہیں۔انہوں نے اہم قومی ایشوز پر میڈیا کے ذمہ دارانہ کردارکی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے میڈیا نے ہمیشہ قومی ایشوز اور ملکی مفاد میں مثبت کردار ادا کیا ہے امید کرتے ہیں کہ ان ایشوز پر بھی میڈیا اپنا مثبت کردار جاری رکھے گا۔معاون خصوصی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان پر جہاں پاکستان کے 22کروڑ عوام اعتماد کر رہے ہیں وہی خطے اور مسلم ممالک کی قیادت بھی وزیراعظم پر اعتماد کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پہلی بار پاکستان دنیا کے سرمایہ کاروں کا کھلے دل سے خیر مقدم کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے نوجوان ہماری حقیقی قوت ہیں، ہمارے اوورسیز ان نوجوانوں کی ترقی کے لیے جو کردار ادا کررہے ہیں وہ لائق تحسین ہے۔

فردوس عاشق اعوان

مزید : صفحہ اول


loading...