سورج مکھی کی کاشت کیلئے موسم بہار کا شیڈول جاری

        سورج مکھی کی کاشت کیلئے موسم بہار کا شیڈول جاری

  



لاہور(کامرس ڈیسک)محکمہ زراعت نے سورج مکھی کی پنجاب میں کاشت کا شیڈول جاری کردیا،سورج مکھی کا شت کے لئے پنجاب کو دوحصوں میں تقسیم کیا گیا ہے، پہلے حصے میں ڈیرہ غازی خان،راجن پوربہاول پور،رحیم یار خان، ملتان، وہاڑی، مظفرگڑھ،لیہ، بہاولنگر، لودھراں اور بھکر شامل ہیں، ان اضلاع میں سورج مکھی کی کاشت کا وقت 31جنوری تک مقرر کیا گیا ہے، دوسرے حصہ میں میانوالی، سرگودھا، خوشاب، جھنگ، ساہی وال، خانیوال، اوکاڑہ، فیصل آباد، سیالکوٹ،گجرانوالہ، لاہور، منڈی بہاؤالدین،قصور،شیخوپورہ، ننکانہ صاحب، ناروال، اٹک، روالپنڈی، گجرات اورچکوال میں سورج مکھی کی کاشت کا وقت15جنوری سے15 فروری تک مقرر کیا گیا ہے۔ سورج مکھی کی کاشت کے لئے ہائبرڈ اقسام ہائی سن 33،ٹی- 40318،اگورا- 4،آگسن- 5264 اور یو ایس- 666 اقسام کی کاشت کریں۔سورج مکھی کی زیادہ پیداوار حاصل کرنے کیلئے موزوں وقت پر کاشت انتہائی ضروری ہے۔تاخیر سے کاشت کی صورت میں نہ صرف پیداوار بلکہ تیل کی مقدار میں بھی کمی واقع ہوتی ہے۔ شرح بیج کا انحصارزمین کی قسم،بیج کی شرح اور طریقہ کاشت پر ہوتا ہے۔کاشتکار اچھے اگاؤ والے صاف ستھرے دوغلی(ہائبرڈ) اقسام کے بیج کی فی ایکڑ مقدار دو کلو گرام فی ایکڑ رکھیں۔بیج کا اگاؤ90فیصدسے زیادہ ہونا چاہیے۔اگر اگاؤ کی شرح کم ہو تو بیج کی مقدار میں اضافہ کریں۔پودوں کی تعداد22ہزار سے23 ہزار فی ایکڑ ہونی چاہیے۔ ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے مزید بتایا کہ امسال وزیر اعظم پاکستان کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت سورج مکھی کی کاشت پر حکومت پنجاب کاشتکاروں کو5ہزار روپے فی ایکڑ سبسڈی بھی فراہم کر رہی ہے جس کا مقصد تیلدار اجناس کے زیر کاشت رقبہ میں اضافہ کرنا ہے تاکہ ملک خوردنی تیل کی پیداوار میں خود کفیل ہو سکے۔یاد رہے پاکستان ہر سال 350 ارب روپے کا خوردنی تیل ہر سال درآمد کرتا ہے۔سورج مکھی کی کاشت سے ملکی درآمدی بل میں کمی واقع ہو گی۔

مزید : کامرس