بیورو کریسی کو نیب سے بچانے کیلئے آرڈیننس لانے کا مشکل فیصلہ کرنا پڑا: وزیراعظم

بیورو کریسی کو نیب سے بچانے کیلئے آرڈیننس لانے کا مشکل فیصلہ کرنا پڑا: ...

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، آن لائن،این این آئی)وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ ہم نے پچاس لاکھ گھر بنانے ہیں، اس میں بیورویسی کا بھی اہم کردار ہے لیکن بیورو کریٹ نیب سے ڈرے ہوئے تھے، نیب آرڈیننس میں ترمیم مشکل فیصلہ تھا لیکن بیوروکریسی کو طریقہ کار کی غلطیوں پر نیب کے شکنجے سے بچانا چاہتے تھے۔اسلام آباد میں سول سرونٹس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جمہوریت میں سیاسی مشاورت اور اتفاق رائے سے چلنا ہوتا ہے۔ شور مچانے والوں کو پہلے ترامیم پڑھ لینی چاہیں۔وزیراعظم نے پاکستان کی معاشی صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک قرضوں کی دلدل میں پھنسا ہوا ہے۔ گزشتہ 10 برسوں کے دوران ملکی قرضوں میں 24 ہزار ارب روپے کا اضافہ ہوا۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان پر 2018 تک 30 ٹریلین قرضوں کا بوجھ تھا۔ ہماری حکومت کا پہلا سال قرضوں کا سود ادا کرنے میں چلا گیا۔ انہوں نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ ہمارے گورننس سسٹم کانظام ٹھیک ہو اور فیصلے جلدی ہوں اور فیصلے جلدی اس لئے نہیں ہورہے تھے کہ بیورو کریٹ نیب سے ڈرے ہوئے تھے کہ پروسیجر پر توکوئی بھی پکڑا جاسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب بیورو کریسی پر نیب کاخوف آگیا تو کوئی بڑا فیصلہ ہوناہی نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ تاجر تو نیب کے دائرہ کار میں نہیں آتے اور جہاں تک ٹیکسز کاتعلق ہے تو یہ ویسے ہی ایف بی آر کاکام ہے،یہ بات میں نے چیئر مین نیب کو بھی سمجھائی ہے۔وزیر اعظمنے کہا کہ ملک میں پیسہ اس وقت آئے گا جب صنعتیں چلیں گی جبکہ بہت جلد ملک کوقرضوں سے نکال لیا جائے گا۔ علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں وفاقی ترقیاتی منصوبوں میں تیزی لانے کی ہدایت کردی۔وزیراعظم نے کراچی سے پی ٹی آئی ایم این ایز (ارکان قومی اسمبلی) کے تجویز کردہ منصوبوں کو شامل کرنے کی منظوری بھی دے دی۔ وفاق کی جانب سے کراچی میں 10 موبائل میڈیکل یونٹس بنائے جائیں گے اور 100 نئے آر او پلانٹس کے منصوبوں پر کام مکمل کیا جائے گا۔بعدازاں وزیراعظم عمران خان اور ابوظہبی کے ولی عہد کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی جس میں باہمی دلچسپی اور دو طرفہ تعاون سے متعلق امور پر بات چیت کی گئی۔قبل ازیں متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید النیہان ایک روزہ دورے پر پاکستان پہنچے تو وزیر اعظم عمران خان نے خود استقبال کیا۔ اس موقع پر روایتی لباس میں دو بچوں نے مہمان خصوصی کو گلدستے پیش کیے اور انہیں خوش آمدید کہا۔بعدازاں وزیراعظم کے ہمراہ ولی عہد شیخ محمد وزیراعظم ہاؤس پہنچے، اس دوران عمران خان نے خود گاڑی چلائی۔ وزیراعظم عمران خان نے ابوظہبی کے ولی عہد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا۔ اس موقع پر وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر اور وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب اور یو اے ای کے وفد کے ارکان بھی موجود تھے۔ متحدہ عرب امارات  کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النہیان کی پاکستان آمد کے موقع پر اسلام آباد پولیس کی طرف سیکیورٹی کے سخت انتظامات  کئے گئے۔بعدازاں متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید النہان پاکستان کا ایک روزہ دورہ مکمل کرنے کے بعد واپس روانہ ہو گئے ہیں۔ وفاقی وزیر بجلی عمر ایوب نے معزز مہمان کو رخصت کیا۔

وزیراعظم عمران خان

مزید : صفحہ اول