600سال قبل سن 2020ءکے بارے میں کی گئی رونگٹے کھڑے کر دینے والی پیش گوئیاں سامنے آ گئیں

600سال قبل سن 2020ءکے بارے میں کی گئی رونگٹے کھڑے کر دینے والی پیش گوئیاں سامنے آ ...
600سال قبل سن 2020ءکے بارے میں کی گئی رونگٹے کھڑے کر دینے والی پیش گوئیاں سامنے آ گئیں

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) 2020ءشروع ہو چکا ہے اور ہر سال کی طرح عہد حاضر کے ماہرین علم نجوم نئے سال کے متعلق پیش گوئیاں کر رہے ہیں تاہم اس سال کے متعلق 600سال قبل کی جانے والی کچھ ایسی خوفناک پیش گوئیاں بھی سامنے آ گئی ہیں کہ سن کر رونگٹے کھڑے ہو جائیں۔ ڈیلی سٹار کے مطابق یہ پیش گوئیاں 14صدی کے ایک ماہر علم نجوم نے کی تھیں۔ سامنے آنے والی اس تاریخ دستاویز میں اس دور کے نجومی نے لکھا ہے کہ ”جس سال یکم جنوری بدھ کے روز آیا اس سال دنیا میں غلے کی شدید قلت ہو جائے گی، شراب اور شہد بھی کمیاب ہو جائیں گے اور پانی گرم ہو جائے گا اور بہار نم آلود ہو گی اور خزاں میں گرمی پڑے گی۔“

اس دستاویز میں مزید پیش گوئیاں کی گئی ہیں کہ ”اس سال دنیا سے تیل سمیت ہر چیز کی کمی ہو جائے گی۔ وبائیں پھیلیں گی اور بڑی تعداد میں لوگ مارے جائیں گے۔ بہت زیادہ جگہوں پر قحط آئے گا۔“رپورٹ کے مطابق یہ دستاویز چودہویں صدی میں شائع ہونے والی ایک کتاب زیبالڈن ڈا کینال (Zibaldone da Canal)کا ایک حصہ ہے۔ اس میں مذکورہ ہولناک پیش گوئیوں کے علاوہ 2020ءمیں تباہ کن زلزلے آنے کے متعلق بھی بتایا گیا ہے۔ لکھا گیا ہے کہ بدھ سے شروع ہونے والے سال میں زمین کو پھاڑ دینے والے واقعات ہوں گے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...