فلسطین کی تمام این جی اوزکا اسرائیل کا ہر سطح پر معاشی بائیکاٹ

فلسطین کی تمام این جی اوزکا اسرائیل کا ہر سطح پر معاشی بائیکاٹ

رام اللہ( اے این این ) فلسطین بھرمیں مقامی سطح پر کام کرنے والی تمام این جی اوز کے نیٹ ورک نے قابض اسرائیل کا سیاسی، اقتصادی، تعلیمی، ثقافتی اور فوجی ہر سطح پر بائیکاٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ این جی اوز نے ملک بھر کے مالیاتی اداروں ، بنکوں اور سرمایہ کار کمپنیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی پر اسرائیل کی معاشی پابندیوں کے جواب میں اسرائیل کے ساتھ کیے گئے تمام معاہدوں کو منسوخ کر دیں۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطینی این جی اوز کے نیٹ ورک کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل فلسطینیوں کےخلاف نسلی امتیاز برت رہا ہے۔ ایسے میں فلسطینیوں کو صہیونی ریاست کے ساتھ کسی بھی میدان میں تعاون کرنا اپنی قوم کےخلاف دشمن سے تعاون کرنے کے مترادف ہے۔ لہذ اسرائیل سے کسی بھی قسم کا لین دین کرنے والی تنظیمیں، ادارے اور افراد ہرقسم کا لین دین بند کردیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل فلسطین میں ہماری تہذیبی،تاریخی اور مذہبی شناخت ختم کرنے کے لیے مہمات چلا رہا ہے۔ فلسطینی شہر غزہ کی پٹی پر گذشتہ چھ سال سے معاشی پابندیاں مسلط ہیں۔ اسرائیل کے ان تمام معاندانہ اقدامات کے جواب میں فلسطینیوں کو بھی ایسی ہی جوابی تزویراتی حکمت عملی اپنانی چاہیے۔مقامی تنظیموںکا کہنا ہے کہ انہوںنے دنیا بھرمیں اسرائیل کے معاشی بائیکاٹ کے لیے مہم چلائی جو کامیاب اور نتیجہ خیز رہی ہے۔ اب فلسطین میں بھی صہیونی ریاست کا اقتصادی، ثقافتی، تعلیمی، سیاسی اور فوجی میدانوں میں بائیکاٹ کی مہم چلانے کی ضرورت ہے۔فلسطینی این جی اوز نے اپنے بیان میں عوام پر زور دیا کہ وہ صہیونی ریاست کے ہاں تیار کردہ مصنوعات کے استعمال کے بجائے اپنے استعمال کی اشیا خود تیار کریں اور صہیونی ریاست کے بائیکاٹ کے نظریے کو فلسطین کے اندر اور بیرون ملک ہر سطح پر پھیلایا جائے۔

مزید : عالمی منظر