ڈیوٹی پر مامور ڈاکٹروں کی سیکیورٹی کے لئے پولیس ہائی الرٹ

ڈیوٹی پر مامور ڈاکٹروں کی سیکیورٹی کے لئے پولیس ہائی الرٹ

لاہور (جنرل رپورٹر) مریضوں کو ہسپتالوں میں بلاتعطل طبی سہولتوں کی فراہمی کو یقینی بنانے اور ڈیوٹی پر آنے والے ڈاکٹروں کو ہر قسم کی سیکیورٹی فراہم کرنے کے لئے صوبے بھر کی پولیس کو ہائی الرٹ رہنے کا حکم جاری کیا گیا ہے جبکہ قانون کو ہاتھ میں لینے والے اور انسانی جانوں سے کھیلنے والے شرپسند عناصر سے سختی سے نمٹا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انسپکٹر جنرل پولیس ، پنجاب محمد حبیب الرحمان نے آج سنٹرل پولیس آفس، لاہور میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال سے پیدا ہونے والی صورت حال کا جائزہ لینے کے لئے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل آئی جی، پنجاب ملک خدابخش اعوان کے علاوہ سینئر افسران نے شرکت کی ۔ اس موقع پر محکمہ پولیس کے ڈاکٹروں کو مختلف ہسپتالوں میں تعینات کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر مرزا شکیل احمد، DIG/EPF لاہور میو ہسپتال، ڈی آئی جی ڈاکٹر محمد عظیم خان لغاری سر گنگا رام ہسپتال، ڈاکٹر مسعود سلیم، ایس ایس ی سی ٹی ڈی جناح ہسپتال، ڈاکٹر طارق چوہان، ایس ایس پی پی ایس آئی اے لاہو رسروسز ہسپتال، ڈاکٹر محمد اقبال اے ایس پی / ایس ڈی پی او صدرسرکل، شیخوپورہ جنرل ہسپتال جبکہ ڈی ایس پی ڈاکٹر مستنصر عطا باجوہ چلڈرن ہسپتال میں میڈیکل ڈیوٹی ادا کریں گے۔میٹنگ میں ڈاکٹر مرزا شکیل احمد کو ان ڈاکٹروں کی ڈیوٹیاں لگانے اور محکمہ صحت کے ساتھ تعاون اور مستقل رابطے کے لئے فوکل پرسن نامزد کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ مرزا شکیل مختلف ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کے ساتھ مسلسل لائزان کے لئے بھی ذمہ دار ہونگے۔ اجلاس میں لاہور کے ہربڑے ہسپتال میں ایک ایس پی رینک کے افسر کی تعیناتی کا بھی فیصلہ کیا گیا جو ہسپتالوں میں سیکیورٹی کے حوالے سے کسی بھی قسم کی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لئے موجود ہوگا۔ اجلاس میں گرفتار ہونے والے ڈاکٹروں کے ساتھ قانون کے مطابق کارروائی کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔

مزید : ایڈیشن 1