جسٹس جواد ایس خواجہ نے بحریہ ٹاﺅن کیخلاف دائر درخواستوں پر عبوری احکامات اردو میں تحریر کرائے

جسٹس جواد ایس خواجہ نے بحریہ ٹاﺅن کیخلاف دائر درخواستوں پر عبوری احکامات ...

اسلام آباد(خبرنگار)سپریم کورٹ میں بحریہ ٹاﺅن کیخلاف زمینوں کے مختلف مقدمات اور دائر درخواستوں پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے عبوری احکامات اردومیں تحریر کرائے ‘ عدالتی تاریخ میں پہلا موقع ہے کہ جب سپریم کورٹ کے کسی جج نے اپنا فیصلہ اردو میں تحریر کرایا ہے۔ سپریم کورٹ نے اسلام آباد پولیس کی جانب سے ملک ریاض کیخلاف عدالت میں آنے والے درخواست گزاروں کو روکنے کی کوشش پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے رجسٹرار سپریم کورٹ کو ہدایت کی ہے کہ درخواست گزاروں کی سپریم کورٹ تک بغیر کسی رکاوٹ کے پہنچنے کو یقینی بنایاجائے ، عدالت میں کئی درخواست گزار ایسے بھی پیش ہوئے کہ جن کے رقبے کی مقدار ایک کنال یا اس سے بھی کم تھی۔بحریہ ٹاﺅن کی جانب سے مختلف درخواستوں کی سماعت کے دوران مختلف علاقوں میں قائم دسترخوانوں پر کھانا کھانے والے عام لوگوں کی تعداد تک نہیں بتائی گئی اور کہا گیا ہے کہ ایسے لوگوں کی تعداد ہزاروں میں ہے کہ جن کو مفت کھانا مہیاءکیا جارہا ہے، جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں جسٹس خلجی عارف حسین پر مشتمل و رکنی بنچ نے عبوری حکم بحریہ ٹاﺅن کے مقدمات کی سماعت کے دوران تحریر کرایا۔ جسٹس جواد ایس خواجہ

مزید : ایڈیشن 1