چیئر مین نیب کرپشن کیخلاف کاروائی نہ کرنے پر فوری مستعفی ہو جائیں عمران خان

چیئر مین نیب کرپشن کیخلاف کاروائی نہ کرنے پر فوری مستعفی ہو جائیں عمران خان

اسلام آباد(این این آئی)پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے مطالبہ کیا ہے کہ چیئرمین نیب فصیح بخاری کرپشن کیخلاف کارروائی نہ کرنے پر فوری طور پر اپنے عہدے سے مستعفی ہو جائیں اور بتایا جائے کہ ملک ریاض سے کیا تعلق ہے؟ پنجاب حکومت ینگ ڈاکٹرز کا مسئلہ حل نہیں کرا سکتی تو تحریک انصاف تعاون کرنے کیلئے تیار ہے ، 13اگست کو شیخ رشید کے جلسے میں جاﺅں گا ، ڈرون حملوں میں مارے جانیوالے لوگوں کے نام بتائے جائیں ، صدر زرداری نے تمام سیاستدانوں کو خریدا ہوا ہے ، قوم کو حقارت کی نظر سے دیکھتے ہیں ایسا وزیراعظم منتخب کیا جو کسی کو پسند نہیں ، رینٹل کیس میںراجہ پرویز اشرف کا مرکزی کردار ہے ، نواز شریف اور زرداری نے تحریک انصاف کیخلاف مک مکا کیا ہوا ہے ، میمو گیٹ میں آصف زرداری ملوث ہیں نواز شریف اس پر کیوں خاموش ہیں ۔ پیر کو مرکزی سیکرٹریٹ میں مخدوم جاوید ہاشمی، جہانگیر ترین اور دیگر رہنماﺅں کے ہمراہ مسلم لیگ (ن) کے سابق وزیر سعید احمد قریشی کی تحریک انصاف میں شمولیت کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے پورے ملک میں تباہی آئی ہوئی ہے مزدوروں کیلئے فیکٹریاں بند ہیں ، امن و امان اور مہنگائی آسمانوں سے باتیں کر رہی ہے، تنخواہ دار طبقہ تباہ اور چوری کرنے کیلئے مجبور ہو گیا ہے لوگوں کا تنخواہوں میں گزارہ نہ ہونے کی وجہ سے قرضے لینے پر مجبور ہیں اور حکمران ملک سے مذاق کر رہے ہیں بلوچستان خیبر پختونخوا میں اغواءبرائے تاوان کی وجہ سے سرمایہ کار دوسری جگہ پر منتقل ہو رہے ہیں جبکہ کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کی وجہ سے لوگ کاروبار چھوڑ کر بیرون ملک جا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال کو حکومت نے مس مینج کیا ہڑتال مریضوں کیلئے درست نہیں پنجاب حکومت نے پبلک سروس کمیشن کے نمائندوں پر ایف آئی آر کاٹی ڈینگی جعلی ادویات اور دیگر بہت سے مسائل ہیں مسلم لیگ ن گزشتہ 25 سالوں میں 5 بار حکومت میں آئی ہمارا پنجاب حکومت سے مطالبہ ہے کہ اگر وہ ینگ ڈاکٹرز کا مسئلہ حل نہیں کرا سکتی تو تحریک انصاف تعاون کرنے کیلئے تیار ہے انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب فصیح بخاری نے بیان دیا ہے کہ آصف علی زرداری نے کہا کہ آئندہ انتخابات تک نواز شریف کیخلاف کوئی مقدمہ نہیں کھولا جائیگا، حدیبیہ پیپرملز اور دیگر کیسز انتخابات تک آصف علی زرداری کے کہنے پر آگے نہیں بڑھیں گے فصیح بخاری کو کس نے اجازت دی ہے کہ وہ یہ فیصلہ کریں کہ کس کیخلاف کارروائی کرنی ہے اور کس کے خلاف کارروائی نہیں کرنی ۔ تمام بڑے سکینڈلز کے پیچھے سیاستدان بیٹھے ہوئے ہیں اس کا مطلب ہے کہ فصیح بخاری کسی بھی سیاستدان کیخلاف کارروائی نہیں کریں گے سپریم کورٹ سے مطالبہ ہے کہ وہ نوٹس لے۔

مزید : صفحہ اول