سپریم کورٹ نے یوسف رضاگیلانی کی نااہلی کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

سپریم کورٹ نے یوسف رضاگیلانی کی نااہلی کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا
سپریم کورٹ نے یوسف رضاگیلانی کی نااہلی کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کی نااہلی کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیاہے جو 42صفحات پر مشتمل ہے جس میں جسٹس جواد ایس خواجہ کا چھ صفحات پر مشتمل اضافی نوٹ بھی شامل ہے ۔فیصلہ چیف جسٹس آف پاکستان کی طرف سے لکھااور جاری کیاگیاجس کے مطابق گیلانی عہدے سے اجنبی ہوگئے مگر آئین و قانون کے خلاف عہدہ سنبھالے رکھا۔آئین کی شق 204کی ذیلی شق دو کے تحت وزیراعظم نااہل ہوئے اور توہین عدالت کا 2003ءکا قانون لاگوہوا۔فیصلے میں سماعت کے دوران اور آئین کے مطابق سامنے آنے والے تمام شواہد بیان کیے گئے ہیں ۔ فیصلے کے مطابق وزیراعظم گیلانی آرٹیکل 63جی ون کے تحت پانچ سال کے لیے نااہل ہیں اور سپیکر کے فیصلے کو وہ تحفظ حاصل نہیں جو پارلیمان کو ہوتاہے جبکہ سپیکرکے پاس کسی متعین چیز کو نظراندازکرنے کا اختیار نہیں اور الیکشن کمیشن کو ریفرنس بھجوانے کے علاوہ سپیکر کے پاس کوئی چارہ نہیں تھا ۔عدالت نے کہاکہ وکلاءمطمئن نہیں کرسکے کہ سزا یافتہ شخص وزیراعظم ہوسکتاہے اور سز ایافتہ وزیراعظم کا امور مملکت چلاناغیر آئینی ہے ۔اعتزاز احسن نے کہاکہ توہین عدالت کی تین مختلف اقسام ہیں جبکہ ٹارنی جنرل کے اعتراضات اپیل کی سطح پر تھے ۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے 19جون کو مختصر فیصلہ سنادیاتھا۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں /Breaking News