بھارت تحریک آزادی کو دبانے کیلئے انتہائی اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے ، اپنے مذموم مقصد میں ہرگز کامیاب نہیں ہو گا، محمد اشرف

بھارت تحریک آزادی کو دبانے کیلئے انتہائی اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے ، ...

  

سرینگر(آن لائن) مقبوضہ کشمیر میںتحریک حریت جموںو کشمیر کے جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی نے کشمیری نوجوانوں کے خلاف بھارتی فوج اورپولیس کے بڑھتے ہوئے جبر و استبداد اور انہیں جھوٹے مقدمات میں ملوث کرنے کی کارروائیوں کی شدید مذمت کی ہے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق محمد اشرف صحرائی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ بھارت تحریک آزادی کو دبانے کیلئے انتہائی اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے لیکن وہ اپنے مذموم مقصد میں ہرگز کامیاب نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں خاص طور پر نوجوانوں کو ہراساں اور انہیں فوجی کیمپوں میں بلا کر تشدد کا نشا نہ بنانے کا سلسلہ تیز کر دیا گیا ہے۔محمد اشرف صحرائی نے کہا کہ چاڈورہ کے علاقے نمتہ ہال کا رہائشی نوجوان محمد حنیف وانی گزشہ کئی ماہ سے سینٹرل جیل سرینگر میں نظر بند ہیں اور قابض انتظامیہ عدالت کو بھی اسکی گرفتاری کی وجہ نہیں بتا رہی۔انہوں نے کہا کہ پلوامہ کے علاقے کاکا پورہ کے ا یک نوجوان شکیل احمد گنائی کو بھارتی فوج اپنے کیمپ میںبار بار بلا کر اس قدر تشدد کا نشانہ بناتی رہی کہ اس نے زندگی سے تنگ کر زہریلی شے کھا کر خود کشی کی کوشش کی ۔

 محمد اشرف صحرائی نے کہا کہ بھارت کی یہ بھول ہے کہ وہ نوجوانوں کو مشق ستم بنا کر تحریک آزادی کو دبانے میں کامیاب ہوگا۔ دریں اثنا ضلع بارہمولہ کے علاقے پلہالن کے نوجوانوں پر مشتمل ایک وفد نے سرینگر کے علاقے حیدر پورہ میں واقع تحریک حریت کے مرکزی دفتر میں آکر اپنے علاقے میں قائم بھارتی فوجی کیمپ کے افسروں اور اہلکاروں کی طرف سے علاقے کے نوجوانوں پر ڈھانے جانے والے مظالم کے بارے میں بتایا ۔ وفد کے مطابق حیدر بیگ میں قائم فوجی کیمپ کا ایک میجر اور اہلکارنوجوانوں خاص طور پر طلباءکو بڑے پیمانے پر ہراساں کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طالب علم کے پاس شاختی کارڈ نہیں ہوتاا سے سخت تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔وفد نے کہا کہ بھارتی پولیس اہلکار رات کے اوقات میں پبلک ٹرانسپورٹ کی گاڑیاں روک کر ڈرائیوروں سے رقوم طلب کرتے ہیں۔وفد نے کہاکہ عوام علاقہ اس ساری صورت حال سے انتہائی تنگ اور پریشان ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -