مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی بھارتی خلاف ورزیوں نے مسئلہ کشمیرکے حل کا راستہ بند کر دیا ہے‘ فاروق رحمانی

مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی بھارتی خلاف ورزیوں نے مسئلہ کشمیرکے حل کا ...

  

اسلام آباد(آن لائن)جموںوکشمیر پیپلز فریڈم لیگ کے چیئرمین محمد فاروق رحمانی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارت کی مسلسل ریاستی دہشت گردی نے مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کا راستہ بند کر دیا ہے۔ محمدفاروق رحمانی نے اسلام آباد میں جاری ایک بیان میں کہا کہ بھارت نے گزشتہ67برسوں کے دوران نہ صرف کشمیریوں کے بنیادی حقوق کچل ڈالے اور حق خود ارادیت غصب کیا بلکہ اپنے آئین کی بھی خلاف ورزی کی۔

 انہوں نے کہا کہ ایک طویل عرصے سے مقبوضہ علاقے میں نافذ بھارتی کالے قوانین نے کشمیریوں کا جینا حرام رکھا ہے اور وہ ایک باعزت زندگی گزارنے سے قاصر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت سینکڑوں کشمیری نوجوان آزادی مانگنے کی پاداش میں جیلوںمیں بند ہیں-

جبکہ بھارتی فوجی اور پولیس اہلکار مقبوضہ علاقے کے اطراف و اکناف میں جبر و استبداد کی کارروائیاں تسلسل کے ساتھ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے مہینے میں بھی بے گناہ لوگوںکا قتل، خواتین کی بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے ۔ محمدفاروق رحمانی نے کہا کہ بھارت گزشتہ دو دہائیوں سے زائد عرصے سے جموں اور بھارت کے مختلف شہروں میں رہائش پذیر کشمیری پنڈتوں کیلئے مقبوضہ وادی کے مختلف مقامات پر علیحدہ کالونیاں بنانے کے منصوبے پرکام شروع کرنے والا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس اقدام کا مقصد صرف اور صرف مقبوضہ جموں و کشمیرمیں آبادی کے تناسب کے تبدیل کرنا ہے اور مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں بدلنا ہے۔ محمد فاروق رحمانی نے کہا کہ بھارت کا یہ منصوبہ سراسر غیر منصفانہ اور بدنیتی پر مبنی ہے جسکا مقصد مقبوضہ علاقے کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنا ہے۔ انہوںنے کہا کہ تمام کشمیریوں اور کل جماعتی حریت کانفرنس کو اس مذموم منصوبے کے خلاف ایک موثر حکمت عملی مرتب کرنی چاہیے۔ محمد فاروق رحمانی نے کہا کہ کشمیری پنڈٹوں کو، جنہیں مقبوضہ علاقے کے سابق گورنر جگموہن نے کشمیریوں مسلمانوں کی نسل کشی کیلئے 1990میں مقبوضہ وادی سے نکالا تھا ، واپس اپنے گھروں میںآنے کا حق رکھتے ہیں لیکن انہیں پہلے کی طرح مسلمانوں کے ساتھ مل جل کر رہنا ہوگا۔ محمد فاروق رحمانی نے کہا کہ بھارت کی اس سازش کے انتہائی خطرنا ک مضمرات ہونگے اور یقینا اس سے مقبوضہ علاقے کے حالات مزید ابتر ہونگے۔ انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ بھارت کے مذموم اقدامات کا نوٹس لیکر اسے جموںو کشمیر میں آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے سے روکے ۔دریںاثناءمحمد فاروق رحمانی نے متحدہ جہاد کونسل کے چیئرمین سید صلاح الدین کی اہلیہ کی وفات پر انتہائی دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ انہوں نے سید صلاح الدین کے ساتھ تعزیتی ملاقات میں مرحومہ کی روح کے ایصال ثواب اور غم زدہ لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دعا کی۔

مزید :

عالمی منظر -