غزہ پٹی میں حماس کے ٹھکانوں پر اسرائیلی فضائی حملے جاری

غزہ پٹی میں حماس کے ٹھکانوں پر اسرائیلی فضائی حملے جاری

  

                                                 غزہ(ثناءنیوز) غزہ پٹی میں حماس کے ٹھکانوں پر اسرائیلی فضائی حملے جاری ہیں، تاہم اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے دھمکی دی ہے کہ وہ حماس کے خلاف مزید سخت کارروائیاں کریں گے۔ نیتن یاہو نے یہ بیان مبینہ طور پر اغوا کے بعد قتل کر دیے جانے والے تین یہودی نوجوانوں کی تدفین کے موقع پر دیا۔ اسرائیل نے ان لڑکوں کے اغوا اور قتل کی ذمہ داری حماس پر عائد کی تھی۔ دوسری جانب حماس نے ان اسرائیلی الزامات کو مسترد کیا ہے۔ حماس نے کہا ہے کہ اسرائیل تین لاپتہ نوجوانوں کی ہلاکت کی ذمہ داری حماس پر عائد کر کے فلسطینیوں کے خلاف جارحیت کا جواز پیدا کرنا چاہتا ہے۔ حماس کے ترجمان سمیع ابو ظہری نے کہا کہ اس واقعے سے متعلق اسرائیلی موقف سامنے آ چکا ہے، جس سے واضح ہوتا ہے کہ اسرائیل فلسطینیوں اور حماس کے خلاف جارحیت پر مائل ہے۔ قومی ٹی وی چینل پر نشر ہونے والے اپنے بیان میں نیتن یاہو نے کہا کہ ان کا پہلا ہدف ان نوجوانوں کے قاتلوں کو ڈھونڈنا ہو گا، ہم اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے، جب تک ان میں سے آخری فرد تک پہنچ نہیں جاتے۔ اسرائیل کا مقصد یہ ہو گا کہ غزہ پٹی پر کنٹرول رکھنے والی حماس تنظیم کے خلاف بڑی کارروائیاں کی جائیں۔ اسرائیلی وزیراعظم نے کہا کہ اس سلسلے میں انہوں نے ملکی سلامتی کی کابینہ کا اجلاس طلب کر لیا ہے-

جس میں اس واقعے کے موثر جواب کا موضوع زیر بحث ہو گا۔ انہوں نے الزام عائد کیا، حماس اس وقت بھی ہمارے شہریوں کے اغوا اور ہمارے علاقوں پر راکٹ حملوں میں تعاون کر رہی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا، اگر ضرورت پڑی تو ہم حماس کے خلاف اپنی مہم کو مزید وسعت دے دیں گے۔

مزید :

عالمی منظر -