ریونیو بورڈ محکمہ فناس کے خود ساختہ اقدامات کیخلاف اشٹام سیلرز کا احتجاج

ریونیو بورڈ محکمہ فناس کے خود ساختہ اقدامات کیخلاف اشٹام سیلرز کا احتجاج

  

 لاہور(اپنے نمائندے سے)محکمہ فنانس کی مخصوص لابی بورڈ آف ریونیو کے افسران نے چیف منسٹر پنجاب کے احکاما ت بھی ہوا میں اڑا دئیے اقرار نامہ جات کی مد میں اشٹام پیپرز 100کی بجائے 500روپے کے استعما ل کیے جانے کی تجویز رد کرتے ہوئے خود ساختہ اقدامات اور ختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے 1200روپے مقر ر کردی سیکرٹری سیٹلمنٹ نے انکشاف ہونے پر محکمہ فنانس کے اقدامات کو لاقانونیت کی بدترین مثال قرار دے دیا دوسر ی جانب پنجاب بھر کے اشٹام سیلرز اپنے بنیادی حقوق چھین جانے اور کاروبار کو بند کرنے جیسے احکامات کے خلاف بورڈآف ریونیو کے ان دفاتروں میں پہنچ گئے سنئیر ممبر کے کمرے کے باہر شدید احتجاج ۔محکمہ فنافس کے اقدامات کے خلاف شدید نعرہ بازی سکرٹری سیٹلمنٹ نے درخواست ملنے پر محکمہ فنانس سے ناصرف بلکہ چیف سکرٹری کے احکامات کی نفی اور غیر قانونی حرکت کے حوالے سے تحریری رپورٹ بھی پنجاب حکومت کو بجھوادی ہے روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق محکمہ فنانس میں تعینات افسران کی مخصوص لابی اور ٹرثری آفیسر خزانہ لاہور کے اہلکاروں کی ایما پر اشٹام سیلر ز کے کاروبار بند کیے جانے کے حوالے سے کی جانے والی سازش بے نقاب ہوگئی ہے جس کے بعد پنجاب بھر کے اشٹام سیلرز محکمہ فنانس کے اہلکاروں اور افسران کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے مذید معلو م ہوا ہے کہ 30جون سے قبل اشٹام سیلرز اقرار نامہ معاہدہ بیع اور مختار نامہ کی تیاری کے وقت 100روپے سے لیکر 1000روپے تک اشٹام پیپرز جاری کرنے کا قانونی اختیار رکھتا ہے تاہم بورڈ آف ریونیو نے اس میں معمولی سی تبدیلی کرتے ہوئے اقرارنامہ معاہد ہ بیع لے لیے استعمال ہونے والے 100روپے کے اشٹام کی بجائے 500روپے کی تجویز دی ہے اور مختار عام کے لیے استعمال ہونے والے 100روپے کے اشٹام پیپروں جوں کے توں چھوڑ دیا جائے بورڈ آف ریونیو کی جانب سے بھیجی گئی سمری وزیراعلی پنجاب نے منظور کرلی اور باقاعدہ منظوری دیتے ہوئے نوٹیفیکشن بھی جاری کر دیا تاہم نوٹیفیکشن جاری ہونے کے بعد معلوم ہوا ٹرثری آفس لاہور کے چند اہلکاروں اور محکمہ فنانس افسران کی مخصوص لابی نے بورڈ آف ریونیو کے اعلی افسران کی اجازت کے لیے بغیر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے اقرار نامہ معاہدہ بیع کے لیے 1200اور مختار عام کے لیے بھی 1200روپے تک کے اشٹام پیپر زاستعمال کرنے کا خود ساختہ آڈر تحریر کرتے ہوئے خود ہی اس نوٹیفیکشن میں ترمیم کر دی جس سے پنجاب بھر کے اشٹام سیلرز بے روز گار ہوگئے چونکہ اشٹام اختیارات بھی مذکورہ لابی نے چھین لیے جس پنجاب بھر کے اشٹام سیلرز محکمہ فنانس کے افسران کے ا ن اقدامات کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے اور بورڈ آف ریونیو کے پنجاب ہیڈ کوارٹر کی عمارت کے باہر شدید احتجاج کرتے ہوئے تعرہ بازی شروع کردی جس پر سکرٹری سیٹلمنٹ پنجاب محمود جاوید بھٹی نے مذکورہ اشٹام سیلرز کا مؤقف سنا اور اشٹام سیلرز کی جانب سے دی جانے والی درخواست پر محکمہ سے فوری جواب طلب بھی کر لیا ہے سکرٹری سیٹلمنٹ نے اس موقع پر روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے آگاہی دی کہ اس ترمیم کے حوالے سے بورڈ آف ریونیو کی کسی مجاز اتھارٹی سے کوئی اجازت نہ لی گئی ہے ان کے خلاف تحریری رپورٹ چیف منسٹر پنجاب کو بھی بجھوائی جائے گی اشٹام سیلزز کو یقین دہانی کرواتے ہیں کہ وہ اس موقع پر صبر سے کام لیں مظاہرے کرنے یا نعرہ بازی کرنے سے مذید انتشار بڑھے گا ہم اشٹام سیلرز کے جائز مطالبات لے لیے ہر ممکن کوشش کریں گے

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -