ٹیکس ادا نہ کرنے پر امیرترین شخص کو تین سال قید اور 50 ملین مصری پاؤنڈ جرمانہ

ٹیکس ادا نہ کرنے پر امیرترین شخص کو تین سال قید اور 50 ملین مصری پاؤنڈ جرمانہ

  


قاہرہ (نیوز ڈیسک) ) ٹیکس ادا نہ کرنے پر مصر کے امیرترین شخص کو تین سال قید اور 50 ملین مصری پاؤنڈ جرمانہ کر دیا گیا۔ 53 سالہ نیسیف ساورس مصر میں اورسکم کسنٹرکشن انڈسٹریز(OCI) اور ایک ڈچ کمپنی (OCI NV) چلا رہے ہیں۔ احرام آن لائن کو ملنے والی اس خبر پر فوری طور پر موقف دینے کے لئے نیسیف اور ان کی کمپنی کا کوئی ترجمان دستیاب نہیں تھا۔ مارچ 2013ء میں مصر کی ٹیکس اتھارٹی نے الزام لگایا تھا کہ اورسکم کسنٹرکشن انڈسٹریز(OCI) پر 14بلین مصری پاؤنڈ(2بلین ڈالر) ٹیکس عائد کیا گیا تھا، جو اس نے ادا نہیں کیا۔ بعدازاں کمپنی نے حکومت سے بات چیت کرکے 7.1 بلین مصری پاؤنڈ ادا کرنے کی حامی بھرتے ہوئے 2013سے 2017تک 10اقساط میں ادائیگی کی یقین دہائی کروادی۔ معاہدے کے مطابق اوسی آئی نے مئی 2013ء میں 2.5بلین مصری پاؤنڈ کی پہلی اور اسی سال دسمبر میں دوسری قسط ادا کرنا تھی جبکہ باقی اقساط 2017 تک ہر سال ادا کی جانی تھیں۔ لیکن ایک سال بعد ہی اوسی آی نے ایک بیان کے ذریعے اعلان کردیا کہ مصری پراسیکیوٹرجنرل نے کمپنی پر لگائے جانے والے تمام الزامات اور جرمانوں کو ختم کر دیا ہے۔، تاہم مصری ٹیکس اتھارٹی کے سربراہ مصطفیٰ عبدالقادر نے رواں برس اپریل میں بیان دیا کہ ٹیکس اتھارٹی نے او سی آئی کے خلاف اپنا کیس واپس نہیں لیا۔

واضح رہے کہ نیسیف 6.7 بلین ڈالراثاثہ جات رکھنے پر مصر کا پہلا اور دنیا کا 205واں امیر ترین شخص ہے۔

مزید :

علاقائی -