ٹیکسٹائل ملوں کی بندش کی سے کپاس کی خریداری متاثر ہونے کا اندیشہ ہے،اپٹما

ٹیکسٹائل ملوں کی بندش کی سے کپاس کی خریداری متاثر ہونے کا اندیشہ ہے،اپٹما

  

لاہور (کامرس رپورٹر)آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (اپٹما) کے قائم مقام چئیرمین سید علی احسن اور سینئر نائب چئیرمین اکبر سیٹھ نے گزشتہ روز نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ دھڑا دھڑ ٹیکسٹائل ملوں کی بندش کی وجہ سے کپاس کی خریداری بری طرح متاثر ہونے کا اندیشہ ہے۔ اگر توانائی کی قلت کا مسئلہ اسی طرح جاری رہا تو اس بات کا قوی امکان ہے کہ رواں برس کاشتکاروں کی پیداواری لاگت بھی مشکل سے پوری ہو گی۔ سید علی احسن نے کہا کہ توانائی بحران کے باعث اب تک پنجاب میں 100 ٹیکسٹائل ملیں بند ہو چکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر ٹیکسٹائل اور اپٹما پنجاب کی ٹیکسٹائل کی صنعت کا توانائی کا مسئلہ حل کروانے کے لئے وزیراعظم سے وقت مانگ رہے ہیں، لیکن ابھی تک اس سلسلے میں کوئی پیش رفت ممکن نہیں ہو سکی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل کے صنعتکاروں نے چینی کمپنی کے تعاون سے 330 میگاواٹ کا کوئلے پر چلنے والا بجلی گھر لگانے کے لئے معاہدہ کر لیا ہے، لیکن اس وقت صنعتی پہیہ رواں رکھنا ایک بڑا مسئلہ بنا ہوا ہے جس کے فوری حل کے لئے حکومت کو اقدامات اٹھانا ہوں گے بصورت دیگر ڈیڑھ کروڑ مزدوروں کا روزگار خطرے میں پڑنے کا امکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی اور گیس کی بندش کے باعث یارن اور کپڑے کی برآمدات میں بالترتیب 22 اور 36 فیصد کمی واقع پو چکی ہے اور اگر یہ سلسلہ اسی طرح چلتا رہا تو برآمدات مزید گر سکتی ہیں۔

اپٹما

مزید :

صفحہ آخر -