حکومت نے قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لیا تو ملک گیر احتجاجی تحریک چلائیں گے سی این جی سٹیشز مالکان

حکومت نے قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لیا تو ملک گیر احتجاجی تحریک چلائیں گے سی ...

  

لاہور ( لیاقت کھرل) گیس کی قیمتوں میں اضافہ اور سی این جی مہنگی کرنے سے ایک عام صارف سب سے زیادہ متاثر، پچاس لاکھ سے زائد گاڑیاں سستے فیول سے محروم اور سی این جی سیکٹر دیوالیہ ہو کر رہ جائے گا۔ حکومت نے قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لیا تو ملک گیر احتجاجی تحریک چلائیں گے۔ ان خیالا ت کا اظہار سی این جی مالکان اور صارفین نے ’’ پاکستان‘‘ سروے میں کیا ہے۔ سی این جی ایسوسی ایشن کے مرکزی رہنما کیپٹن (ر) شجاع انور نے کہا کہ سی این جیسٹیشنز اربوں روپے کا سالانہ ریونیودے رہے ہیں۔ سی این جی مہنگی کرنے سے پورے ملک میں 50 لاکھ جبکہ پنجاب میں 28 لاکھ سے زائد گاڑیاں متاثر ہوں گی جس سے سستے فیول کا حصول رُک جائے گا او ر سی این جی پر چلنے والی گاڑیوں کا پہیہ جام ہوجائے گا۔ سی این جی ایسوسی ایشن کے مرکزی چیئرمین غیاث پراچہ نے کہا کہ سی این جی سیکٹر سے روزانہ 60 سے 65 کروڑ روپے جبکہ سالانہ 65 سے 70 ارب روپے ریونیو آ رہا ہے ۔ سی این جی سیکٹر میں آئے روز گیس کی لوڈشیڈنگ ، قیمتوں میں اضافہ اور بلاوجہ ٹیکس لگانے سے سی این جی سیکٹر تباہ ہوجائے گا، جبکہ خواجہ بابر، ماجد انصاری نے کہا کہ سی این جی سیکٹر میں آئے روز ٹیکس اور قیمتوں میں اضافہ سے سی این جی اسٹیشنوں پر کام کرنے والے 70 ہزار سے زائد مزدوروں کا مستقبل تباہ ہو جائے گا۔ حکومت سی این جی سیکٹر کو تباہی سے بچائے، وگرنہ ملک گیر احتجاجی تحریک چلائیں گے۔ اس حوالے سے سی این جی اسٹیشنوں پر کام کرنے والے مزدروں اور صارفین کی ایک بڑی تعداد جن میں حاجی غلام حسین، الفت علی، ملک نثار احمد، اشرف حسین، ملک محمد مبشر، رزاق یونس، جاوید نور، کنیزاں بی بی ، تصور بی بی اور اکبر علی خان نے بھی سی این جی کی قیمتوں میں اضافہ کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سے عام صارف سب سے زیادہ متاثر ہو گا اور اب کھاد کی قیمتوں میں اضافہ سے جہاں زمیندار متاثر ہو گا وہاں مہنگائی بھی بڑھے گی۔ حکومت کو چاہیے کہ آئی ایم ایف کے حکم پر کیا گیا گیس کی قیمتوں میں اضافہ واپس لے، اس سے عام آدمی سب سے زیادہ متاثر ہو گا۔ حاجی غلام حسین نے کہا کہ ایک طرف سی این جی سیکٹر کو ہفتہ میں صرف 18 گھنٹے گیس کی فراہم کی جا رہی ہے تو دوسری جانب سی این جی کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے حکومت مداخلت کرے، وگرنہ سی این جی مالکان کی جانب سے کیے گئے ملک گیر احتجاجی تحریک کا مکمل ساتھ دیا جائے گا اور گیس کمپنی کے دفاتر کا گھیراؤ کیاجائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -